رحمت علی رازی کا انتقال

رحمت علی رازی کا انتقال

سینئر صحافی، ادارہ عزم کے چیئرمین اور روزنامہ ”طاقت“ کے چیف ایڈیٹر رحمت علی رازی اچانک انتقال کر گئے، وہ فیصل آباد سے شادی کی ایک تقریب میں شرکت کے بعد لاہور واپس آ رہے تھے کہ دِل کا دورہ پڑا،ان کے صاحبزادے ساتھ تھے، فوری طور پر قریبی ہسپتال لے جایا گیا، مگروہ جانبر نہ ہو سکے۔ رحمت علی رازی نے صحافت کا آغاز رپورٹر کی حیثیت سے کیا اور نام کمایا۔ وہ واحد جرنلسٹ تھے، جنہوں نے اے پی این ایس کے مسلسل سات ایوارڈحاصل کئے، اور اس کے بعد انٹری بند کردی، ورنہ شاید مزید ایوارڈ بھی لے جاتے، ان کی کارکردگی کے اعتراف میں ریاست کی طرف سے تمغہ حسن ِ کارکردگی بھی دیا گیا۔رحمت علی رازی کالم نویس کی حیثیت سے بھی معروف تھے۔ان کو افسر شاہی کے امور سے کماحقہ آگاہی تھی اور اس موضوع پر انکشافات سے پُر کالم لکھتے تھے، انہوں نے اپنا اشاعتی ادارہ عزم کے نام سے قائم کیا، اُردو اور انگریزی اخبار بھی شائع کرتے تھے۔مرحوم رحمت علی رازی کی میت لاہور لائی گئی، ان کی نمازِ جنازہ آج(اتوار) ڈیڑھ بجے بعد نمازِ ظہر آر بلاک ماڈل ٹاؤن (ایکسٹینشن) کی گراؤنڈ میں ادا کی جائے گی، پسماندگان میں دو بیٹے اور دو بیٹیوں کے علاوہ بیوہ شامل ہیں۔ اللہ ان کی مغفرت فرمائے، آمین

مزید : رائے /اداریہ