ورلڈ کپ کا وہ میچ جس میں پاکستان اور بھارت نے مل کر ایک ٹیم سری لنکا کے خلاف میدان میں اتاری

ورلڈ کپ کا وہ میچ جس میں پاکستان اور بھارت نے مل کر ایک ٹیم سری لنکا کے خلاف ...
ورلڈ کپ کا وہ میچ جس میں پاکستان اور بھارت نے مل کر ایک ٹیم سری لنکا کے خلاف میدان میں اتاری

  


نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان اور بھارت کا کرکٹ میچ ہی شائقین کو قسمت سے دیکھنے کو ملتا ہے لیکن کرکٹ کی تاریخ میں ایک موقع ایسا بھی گزرا ہے کہ پاکستان اور بھارت کی کرکٹ ٹیموں نے اکٹھے ہو کر سری لنکا کے خلاف ایک میچ کھیلا تھا اور وہ بھی ورلڈ کپ کا میچ۔ یہ 1996ءکے ورلڈ کپ کا واقعہ ہے، جس کی میزبانی پاکستان ، بھارت اور سری لنکا نے مشترکہ طور پر کی تھی۔

ٹورنامنٹ کے لیگ میچوں میں آسٹریلیا یا ویسٹ انڈیز کوسری لنکا کے خلاف ایک میچ کھیلنا تھا لیکن دونوں ٹیموں نے سری لنکا کے ساتھ میچ کھیلنے سے انکار کر دیا۔ ان ٹیموں کے انکار کی وجہ یہ تھی کہ یہ میچ سری لنکا میں ہونا تھا لیکن وہاں امن و امان کی صورتحال ان دنوں کافی ناگفتہ بہ تھی، جس کی وجہ سے آسٹریلیا اور ویسٹ انڈیز کی ٹیموں نے وہاں جانے سے انکار کر دیا تھا۔ اس انکار پر فیصلہ ہوا کہ پاکستان اور بھارت کی ٹیموں سے منتخب کھلاڑی ایک ٹیم بن کر میدان میں اتریں گے اور سری لنکا کے خلاف لیگ میچ کھیلیں گے۔

چنانچہ کرکٹ کے شائقین نے وہ تاریخی منظر دیکھا جب وسیم اکرم، سچن ٹنڈولکر، سعید انور، عامر سہیل، انیل کمبلے، اجے جدیجا، راشد لطیف، وقار یونس اور دیگر پاکستانی و بھارتی کھلاڑی ایک ٹیم بن کر میدان میں اترے۔ سری لنکا کی ہر وکٹ گرنے پر ایک دوسرے کو گلے لگاتے رہے۔وسیم اکرم کی ایک گیند پر سچن ٹنڈولکر نے کیچ پکڑ کر سری لنکا کے ایک کھلاڑی کو آﺅٹ کیا۔ اس میچ میں سری لنکا نے 40اوورز میں 9وکٹوں کے نقصان پر 168رنز بنائے۔ جواب میں عامر سہیل اور سعید انور نے اوپننگ کی، ان کے بعد سچن ٹنڈولکر آئے، سچن نے اس میچ میں 36رنز بنائے تھے۔ بالآخر یہ میچ پاکستان اور بھارت کی ٹیم نے جیت لیا اور یوں دنیا نے دیکھا کہ وہ دو ملک، جو دنیا میںایک دوسرے کے سب سے بڑے حریف، حتیٰ کہ دشمن سمجھے جاتے ہیں، ان کی ٹیمیں ایک ساتھ اپنی فتح کا جشن منا رہی تھیں۔ اس میچ میں انیل کمبلے مین آف دی میچ قرار پائے تھے۔

مزید : کھیل