گورنر سندھ کے اختیارات محدود، اسمبلی نے قانون منظور کر لیا

  گورنر سندھ کے اختیارات محدود، اسمبلی نے قانون منظور کر لیا

  

کراچی (سٹاف رپورٹر، نیوز ایجنسیاں) سندھ اسمبلی اجلاس میں گورنر کے اختیارات محدود کرنے کا مسودہ قانون منظور کر لیا گیا۔تفصیلات کے مطابق پیر کو سندھ اسمبلی کے اجلاس میں گورنر کے اختیارات محدود کرنے کا مسودہ قانون منظور کر لیا گیا، اب وزیر اعلیٰ کے مشیروں کی تقرری کیلئے گورنر کی توثیق کی ضرورت نہیں ہوگی۔اجلاس میں سندھ میں مشیران کی تقرری اور تنخواہ سے متعلق اختیارات کے بل میں ترامیم منظور کی گئیں۔ سندھ کورونا ایمرجنسی ریلیف ایکٹ بھی ایوان سے منظور کر لیا گیا، جس سے کورونا ایمرجنسی ریلیف آرڈیننس کے تحت دی گئی رعایتوں کو قانونی تحفظ مل گیا۔سندھ وبائی امراض ترمیمی ایکٹ بھی منظور ہو گیا، وبائی امراض ترمیمی ایکٹ کی خلاف ورزی پر جرمانہ 10 لاکھ روپے تک کیا گیا ہے۔سندھ اسمبلی میں احتیاطی تدابیر کے تحت اجلاس کے قواعد و ضوابط تبدیل کردیے گئے۔سندھ کی پارلیمانی تاریخ میں اجلاس کیلئے پہلی بار جدید ٹیکنالوجی کا استعما ل کیا جائے گا، اسمبلی کے قواعد و ضوابط میں اتفاق رائے سے ترمیم کردی گئی۔ارکان اپنے گھر اور آفس سے بیٹھ کر اسمبلی اجلاس میں شرکت کر سکیں گے۔ اس حوالے سے وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ ہم چاہتے ہیں وہ ممبرز جن کی رپورٹ مثبت ہے وہ بجٹ سیشن میں حصہ لیں اور وہ ممبرز بھی جن کی عمر زیادہ ہے انہیں اسمبلی نہیں آنا پڑے۔مراد علی شاہ نے کہا شرط لگائی تھی کہ ممبر ٹیسٹ کروا کر اسمبلی آئیں، کل 17تاریخ کو بجٹ پیش کریں گے، میں نے 12 جون کو ٹیسٹ کروایا میری رپورٹ منفی ہے، ہو سکتا ہے آدھے گھنٹے بعد مثبت ہو جائے۔ اب تک 90اراکین کے ٹیسٹ ہوئے ہیں جن میں سے 83منفی آئے۔عارف مصطفی جتوئی کا کل کورونا ٹیسٹ پازیٹو آیا تھا، کل ہی ان کا پھر ٹیسٹ کرایا تو وہ نیگیٹو آیا، عارف مصطفی کا ایک ٹیسٹ اور کرائیں گے۔ سافٹ وئیر کے ذریعے گھر سے بیٹھ کر بھی تقریر کی جا سکتی ہے، ممبرز کو ای میل پر لاگ ان آئی ڈی آجائے گی۔ اگرکسی نے اپنی آئی ڈی کسی دوسرے کو دی تو وہ اس کا خود ذمہ دارہوگا۔ بجٹ کے بعد وزیرصحت کورونا پر پھر بریفنگ دیں گی۔ آن لائن سیشن بلانا اسپیکر سندھ اسمبلی کی صوابدید پر ہوگا۔اس سلسلے میں سندھ حکومت کے ترجمان مرتضی وہاب نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ سندھ پروگریسیو اور فیوچرسٹک قانون سازی میں پھر بازی لے گیا۔

گورنرسندھ اختیارات

مزید :

صفحہ آخر -