تاجروں نے پنجاب کے آئندہ مالی سال کے بجٹ کو بھی مسترد کردیا

  تاجروں نے پنجاب کے آئندہ مالی سال کے بجٹ کو بھی مسترد کردیا

  

لاہور(این این آئی) تاجروں نے وفاق کے بعد پنجاب کے آئندہ مالی سال کے بجٹ کو بھی مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ وفاقی حکومت کی طرح پنجاب حکومت نے بھی چھوٹے تاجروں کو کچھ نہیں دیا تاہم تاجروں کی طرف سے بجٹ میں ٹیکسز عائد نہ کئے جانے پر اطمینان کا اظہار کیا ہے۔آل پاکستان انجمن تاجران کے مرکزی صدر اشرف بھٹی نے کہا ہے کہ حکومت بجٹ میں چھوٹے تاجروں کے لئے اعلان کر سکتی تھی لیکن اس سے گریز کیا گیا ہے۔ کورونا وائرس کی وجہ سے کئے گئے لاک ڈاؤن نے تاجروں کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے آئندہ مالی سال کے بجٹ میں ٹیکسز عائد نہ کرنا اور بعض شعبوں کیلئے ٹیکسز میں کمی کرنا درست اقدام ہے۔ صدر آل پاکستان انجمن تاجران (خالد پرویز گروپ) کے سربراہ خالد پرویز نے کہا کہ وفاق کی طرح پنجاب کے بجٹ میں بھی چھوٹے تاجران کو کچھ نہیں دیا گیا۔ سخت معاشی حالات میں تاجروں کو حالات کے رحم وکرم پر چھوڑ دیا۔امتیاز علی، اورنگ زیب خان، اعظم بٹ، رزاق ببر، قاسم عباس کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سینکڑوں افراد کورونا کے باعث بیروزگار ہوگے۔ بہت سے تاجر کاروبار کرنے کے قابل نہیں رہے جنہیں ریلیف ملنا چاہیے تھا۔ ریو نیو ایڈوائزر ایسوسی ایشن کے چیئرمین عامر قدیر نے کہا کہ بجٹ میں ٹیکسیشن کے نظام میں اصلاحات کا کوئی ذکر نہیں ہے جس سے صوبے کی معیشت میں تحرک پیدا نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ تاریخ میں پہلی مرتبہ وفاقی وصوبائی بجٹ میں عام آدمی اور تاجر برادری کو کچھ نہیں مل سکا، لاہور کی کسی مارکیٹ میں پارکنگ پلازہ کی تعمیر کیلئے بجٹ مختص نہیں کیا گیا۔

مسترد

مزید :

صفحہ آخر -