بھارت کے سلامتی کونسل ممبر بننے سے کوئی قیامت نہیں آئے گی: شاہ محمو د قریشی

  بھارت کے سلامتی کونسل ممبر بننے سے کوئی قیامت نہیں آئے گی: شاہ محمو د قریشی

  

اسلام آباد،نئی دہلی (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان نے مقبوضہ وادی کشمیر میں کھلی کچہری کا موقع فراہم کرنے کا مطالبہ کر دیا۔ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے بھارتی اقدامات کو کوئی کشمیری تسلیم نہیں کرتا، سلامتی کونسل کی رکنیت کا ایک باقاعدہ طریقہ کار ہے، اوراگربھارت کے سلامتی کونسل ممبر بننے سے کوئی قیامت نہیں آئیگی، بھارت کے ہمسایوں کو ہندوتوا سوچ پر تشویش ہے۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا بھارت 7 بار سلامتی کونسل کا ممبر رہا ہے، انڈیا کے سلامتی کونسل ممبر بننے سے کوئی قیامت نہیں آئے گی، بھارت سلامتی کونسل کی قراردادوں کو اہمیت کیوں نہیں دے رہا، میرے خطوط سلامتی کونسل کے ریکارڈ کا حصہ ہیں، توقع تھی کووڈ 19 کے بعد بھارتی رویے میں نرمی آئیگی لیکن بھارت کا مقبوضہ کشمیر میں ظلم برقرار ہے۔ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا او آئی سی ممالک کو بھی خطوط لکھے ہیں، دلی کے واقعات ہم بھولے نہیں، آپ اسے چھپا نہیں سکتے، شہریت بل پر بھا رتی اپوزیشن سراپا احتجاج ہے، بھارت چین اور نیپال کیساتھ گفت و شنید کے وعدے کرتا رہا، کونسا ملک ہے جو آج بھارتی اقدامات سے مطمئن ہے، بھارت انسانی حقوق کو پامال کر رہا ہے، دنیا دیکھ رہی ہے، بھارت میں مسلما نوں کیساتھ امتیازی سلوک کیا جا رہا ہے۔ شاہ محمود قریشی نے بھارتی وزیر دفاع کے من گھڑت بیان کا دو ٹوک جواب دیتے ہوئے کہا کہ اگر وہ سمجھتے ہیں کشمیری ان کیساتھ ہیں تو میں انہیں دعوت دیتا ہوں کہ مظفرآباد آ جائیں اور آکر دیکھ لیں کتنے کشمیری ان کی ہاں میں ہاں ملاتے ہیں،کیونکہ جتنا کشمیری آج بھارت سر کار سے متنفر ہے اتنا پچھلی سات دہائیوں میں نہیں تھا۔انہوں نے مزید کہا کہ بھارتی وزیر دفاع مجھے یا عمران خان کو سرینگر آنے کی دعوت دیں، دیکھ لیتے ہیں کتنے کشمیری ہماری با ت پر توجہ دیتے ہیں۔ مودی سرکار غلط فہمی کا شکا ر ہے، اس طرح دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائے گا۔ بھارتی افواج کے مقبوضہ کشمیر میں سرچ آپریشن جاری ہیں، بھارت آج بنگالیوں کو دیمک سے تشبیہ دیتا ہے، دنیا بھارت کے ہاتھوں انسانی حقوق کی پامالی کو دیکھ رہی ہے۔ کشمیر کی تقسیم کے بھارتی اقدام کو کسی نے تسلیم نہیں کیا۔قبل ازیں میڈیا میں رپورٹس آئی تھیں کہ مقبوضہ کشمیر میں قتل عام میں مصروف مودی سرکار نے سکیورٹی کونسل کے غیر مستقل رکن بننے کیلئے جوڑ توڑ بھی شروع کر دیا ہے۔

شاہ محمود

لاہور(نمائندہ خصوصی)گور نر پنجاب چوہدری سرور نے وزیر خارجہ شاہ محمود قر یشی سے ملاقات کی جس میں انہوں نے وزیر خارجہ کو بھارتی مسلمانوں اور کشمیر یوں کیساتھ ہونیوالے مظالم کیخلاف یورپی اور بر طانوی اراکین پار لیمنٹ کیساتھ رابطوں کے بارے میں بتایا۔ دفتر خارجہ میں ہونیوالی ملاقات کے دوران گور نر پنجاب چوہدری سرور نے وزیر خارجہ کو مزیدبتایا کہ یورپی اور بر طانوی اراکین پار لیمنٹ کو لکھے گئے خط کے بعد یورپی پارلیمنٹ کے نائب صدر فابیو کاستالدو سمیت15سے زائد اراکین نے بھارتی مظالم کیخلاف یورپی پار لیمنٹ کو خط بھی لکھ دیا ہے اور بھارتی مظالم کیخلاف یورپی پار لیمنٹ سمیت دیگر فورم پر آواز بلند کر نے کی بھی یقین دہانی کروائی ہے، آج دنیا امن کی بات کر نیوالے وزیر اعظم عمران خان کے موقف کیساتھ کھڑی ہو رہی ہے جبکہ بھارت کو ہر محاذ پر منہ کی کھانا پڑ رہی ہے، جبکہ وزیر خارجہ شاہ محمود قر یشی نے گور نر چوہدری سرور کے رابطوں کے بعد یورپی پار لیمنٹ میں بھارت کیخلاف آواز بلند ہونے کو سراہا اور کہا کہ وزیر اعظم عمران خان کی قیادت میں پاکستان دنیا میں کشمیر یوں کا مقدمہ لڑ رہا ہے، بھارت کے تمام تر منفی پروپیگنڈے کے باوجود یورپی پا ر لیمنٹ کے اراکین کا اپنے صدر کو بھارت مظالم کیخلاف خط لکھنا خوش آئند ہے اور اس بات میں کوئی شک نہیں جنگی جنون میں مبتلا بھارت آج دنیا میں ایکسپوز ہو رہا ہے جبکہ پاکستان سفارتی محاذ پر بھی بھار ت کو بھر پور شکست دے رہا ہے۔

گورنر پنجاپ ملاقات

مزید :

صفحہ اول -