رستم،ووچ خوڑ پل روڈ کی تعمیر میں سست روی کیخلاف احتجاجی مظاہرہ

رستم،ووچ خوڑ پل روڈ کی تعمیر میں سست روی کیخلاف احتجاجی مظاہرہ

  

رستم(نمائندہ پاکستان) مین چوک تارستم ووچ خوڑ پل روڈ کی عدم تعمیر اور کام میں سست روی کے خلاف رستم کے تاجران سراپا احتجاج، رستم بازار میں شدید احتجاجی مظاہرہ، مظاہرین نے ٹھیکیدار کے خلاف شدید نعرہ بازی کی، اگر رو ڈ پر جلد از جلد کام آغاز نہ ہوا تو رستم مین چوک میں دھرنا دینگے جس کی تمام تر ذمہ داری ٹھیکیدار پر عائد ہو گی۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ دو مہینوں سے مین چوک سے رستم ووچ خوڑ پل تک سڑک پر تعمیراتی کا شروع ہوا تھااب ٹھیکیدار نے روڈ پر کنکریٹ ڈال کر کا م بند کر دیا ہے جس کی وجہ سے مین بازار کے تاجران اور عام لوگوں کو شدید گرد وغبار کی وجہ سے شدید مشکلات کا سامنا کر نا پڑ ھ رہا ہے تاجران کا صبر کا پیمانہ ختم ہو کر احتجاجأئ سڑک پر نکل آئیں اور بھرپور احتجاج کیا احتجاج کے دوران مظاہرین نے کہا کہ ٹھیکیدار نے دومہنوں میں آدھا کلو میٹر سڑک تعمیر نہیں کیا اور بلا وجہ سڑک پر تعمیراتی کام بند کروا دیا ہے گردوغبار سے دکانداران، راہگیر، ٹرانسپوٹران اور مقامی آبادی مختلف بیماریوں میں مبتلا ہو رہے ہیں ایک طرف ملک میں کورونا وباء سے پھیلا ہوا خوف و ہراس جبکہ دوسری طرف روڈ کی عدم تعمیر، ٹھیکیدار کی غفلت اور گرد و غبار کی وجہ سے تاجران اور راہگیر مختلف بیماریوں میں مبتلا ہونے سے مزید ڈر پیدا ہو گیا ہے انہوں نے کہاکہ دکانوں میں لاکھوں، کروڑوں روپوں کا سامان بھی خراب ہونے کا خدشہ ہمہ وقت ہوتا ہے محکمے کے ذمہ داران گزشہ دو مہینوں میں بھی جاری کام کا جائزہ لینے کی زحمت گوارہ نہیں کرتے رستم کے اس اہم شاہراہ جس تبلیغی مرکز، ٹائپ ڈی ہسپتال رستم، شفاخانہ خیوانات، گورنمنٹ ہائی سکول رستم، گورنمنٹ گرلز ہائرسیکنڈری سکول رستم کے علاوہ کئی اہم علاقوں گاوں بازار، علی، پیرسئی، بادام اور دیگر اہم مقامات کا واحد سڑک ہے ٹھکیدار کی غفلت اور لاپرواہی سے مکمل نہیں ہو رہا ہے انہوں نے صوبائی حکومت اور دیگر ذمہ داران سے مطالبہ کیا کہ اگر ٹھیکیدار نے جلد از جلد سڑک پر کام شروع نہ کیا تو مین بازار کے دکانداران اور انجمن تاجران رستم مین چوک میں دھرنا پر مجبور ہو جائے گی جس کی تمام تر ذمہ دار متعلقہ ٹھیکیدار پر عائد ہو گی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -