ٹرانسپورٹ پر پابندی کیخلاف درخواست غیر معینہ مدت تک ملتوی

ٹرانسپورٹ پر پابندی کیخلاف درخواست غیر معینہ مدت تک ملتوی

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ ہائیکورٹ نے بین الصوبائی ٹرانسپورٹ پر پابندی کے خلاف درخواست کی سماعت ٹرانسپورٹرز کے نامناسب رویے اور بار بار مداخلت کرنے پر غیر معینہ مدت تک ملتوی کردی۔دوران سماعت ٹرانسپوٹر کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ سندھ حکومت نے مخصوص ٹرمینلز سے بسیں چلانے کی اجازت دی ہے جہاں سے صوبائی حکومت نے ٹرانسپورٹ چلانے کی اجازت دی وہ پرائیویٹ بس ٹرمینلز ہیں۔پرائیویٹ ٹرمینلز سے 4 ہزار فی بس وصول کیا جاتا ہے، جس پر عدالت نے ریمارکس دیئے کے سندھ حکومت کے اپنے کتنے ٹرمینلز ہیں۔ٹرانسپوٹر کے وکیل نے بتایا کے سندھ حکومت کا یوسف گوٹھ میں اپنا ٹرمینل ہے وہاں سے بسیں صرف بلوچستان کے لیے جاتی ہیں، دیگر ٹرمینلز بنانے کے لیے کے ایم سی کہتی ہے پیسے ہی نہیں ہیں۔ٹرانسپوٹر ایسوسی ایشن کے نمائندے کی جانب سے بغیر اجازت دلائل دینے اور مداخلت پر عدالت نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ یہ کسی کا بس اڈا نہیں کمرہ عدالت ہے۔اس کے بعد عدالت نے ٹرانسپورٹرز کے نامناسب رویے پر سماعت غیر معینہ مدت تک ملتوی کردی۔

مزید :

صفحہ آخر -