کورونا وائرس کے بغیر علامات والے مریضوں کے بارے میں اہم انکشاف

کورونا وائرس کے بغیر علامات والے مریضوں کے بارے میں اہم انکشاف
 کورونا وائرس کے بغیر علامات والے مریضوں کے بارے میں اہم انکشاف

  

ٹوکیو(ڈیلی پاکستان آن لائن)جاپان میں کی گئی ایک ٹحقیق میں کورونا وائرس کے بغیر علامات والے مریضوں کے بارے میں اہم انکشاف ہوا ہے۔فیوجیتا ہیلتھ یونیورسٹی کی جانب سے کی گئی تحقیق میں پتہ چلا ہے کہ  کورونا وائرس کے اسمپٹومیٹک مریض ٹیسٹ سے بیماری کی تصدیق کے بعد عموماً 9 دن میں صحتیاب ہوجاتے ہیں۔

 ڈان نیوز کے مطابق جاپانی محققین نے اس تحقیق میں  ڈائمنڈ کروز شپ میں کورونا وائرس سے متاثر ہونے والےان افراد کا جائزہ لیا جن میں کووڈ انیس کی تصدیق تو ہوئی تاہم ان میں کوئی علامت نظر نہیں آئی ۔ تحقیق کے مطابق ان میں گیارہ افراد ایسے بھی تھے جن میں کئی دنوں بعد علامات نظر آئیں۔

اس نئی تحقیق کے نتائج طبی جریدے نیوا انگلینڈ جرنل آف میڈیسین میں شائع ہوئے اور محققین کا کہنا تھا کہ بغیر علامات والے مریضوں کی اکثریت میں بیماری کے دوران نشانیاں نظر نہیں آتیں۔

نتائج میں بتایا کہ ایسے لگ بھگ 50 فیصد افراد میں وائرس 9 دن کے اندر کلیئر ہوجاتا ہے جبکہ 90 فیصد مریض 15 دن میں صحتیاب ہوجاتے ہیں۔

تحقیق میں یہ بھی دریافت کیا گیا کہ بیشتر مریضوں کا ابتدائی تصدیق کے بعد 5 دن میں صحتیابی کا امکان نہ ہونے کے برابر ہوتا ہے۔

جاپانی محققین نے تخمینہ لگایا کہ ایسے ماحول میں جہاں کورونا وائرس آسانی سے پھیل سکتا ہو، وہاں بغیر علامات مریضوں کی تعداد ممکنہ طور پر علامات والے افراد کے برابر ہوسکتی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ نتائج سے ثابت ہوتا ہے کہ تشخیص کے بعد بار بار ٹیسٹ کرنا بے معنی ہے کیونکہ نتائج ایک جیسے ہی رہتے ہیں اور وسائل درست طریقے سے استعمال نہیں ہوپاتے۔

اس تحقیق کے نتائج کے بعد جمعے کو جاپانی وزارت صحت نے ہسپتال میں زیرعلاج کووڈ 19 کے مریضوں کے لیے اپنی گائیڈلائنز میں نظرثانی کی اور اب ہدایت کی گئی کہ ایسے مریض جن کے 6 دن کے دوران 2 بار نیگیٹو آئے ہوں، انہٰں ڈسچارج کردیا جائے۔

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -