سیاہ فام افراد کے حق میں مظاہرے،امریکی صدر آج کیا کرنے جارہے ہیں؟

سیاہ فام افراد کے حق میں مظاہرے،امریکی صدر آج کیا کرنے جارہے ہیں؟
سیاہ فام افراد کے حق میں مظاہرے،امریکی صدر آج کیا کرنے جارہے ہیں؟

  

واشنگٹن(ڈیلی پاکستان آن لائن) امریکہ میں سیاہ فام شہری کی پولیس اہلکارکے ہاتھوں ہلاکت کے بعد ملک بھرمیں پھوٹنے والے مظاہروں کا صلہ ملنے ک وقت آگیا۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ آج افریقی امریکیوں سے سلوک کرنے سے متعلق ایک ایگزیکٹو آرڈر پر دستخط کرنے جارہے ہیں۔

برطانوی خبررساں ادارے رائٹرز نے امریکی حکام کے حوالے سے بتایا ہے کہ صدر ٹرمپ آج ایک ایگزیکٹو آرڈر پر دستخط کرنے والے ہیں جو پولیس اہلکاروں کے افریقی امریکیوں اور دیگر سےبہتر  سلوک میں کرنے کے لیے تیار کیاگیاہے۔

اس ایگزیکٹو آرڈر کے تحت پولیس اہلکاروں کی تربیت ،صداقت اور ذہنی صحت کو مزید بہتر بنایاجاسکے گا۔

 یہ آرڈر 25 مئی کو منی ایپلس میں سیاہ فام شہری جارج فلائیڈ کی ہلاکت کے بعد پھوٹنے والے مظاہروں کی وجہ سے لایا گیا ہے جس کی وجہ سے ٹرمپ لا اینڈ آرڈر کی مشکل ترین صورتحال میں پھنس کررہ گئےہیں۔اس حوالے سے امریکی صدر کو نہ صرف ڈیموکریٹس بلکہ اتحادیوں کی جانب سے بھی تنقید کرنا پڑی ہے اس کے علاوہ یہ مظاہرے ان کی دوسری مدت کے لیے صدارتی مہم کے لیے بھی شدید نقصان کا باعث بن رہے ہیں۔

لا اینڈ آرڈر کا مقصد پولیس کے نظام میں اصلاحات اور بہتری لانا ہے۔

یہ ایگزیکٹو آرڈر امریکی پولیس کے معیار میں بہتری لانے کے لیے تیار کیا گیا ہے جو محکمے کو پابند بنائے گا کہ وہ معلومات کے تبادلے کے ذریعے اس بات کو یقینی بنائے کہ جب تک درخواست گزار کے بیک گراونڈ ،اس کے سماجی میل جول ،تشدد پسند ی اور تنہائی سے متعلق معلومات جمع نہیں ہوں گی تب تک کسی امیدوار کو بھرتی نہیں کیاجاسکے گا۔

خیال رہے کہ امریکہ میں جارج فلائیڈ کی ہلاکت تبدیلی کا استعارہ ثابت ہوئی ہے۔ پولیس اہلکار کے گھٹنے تلے دب کر دم گھٹنے سے ہلاک ہونےو الے جارج کے حق میں نہ صرف امریکہ بلکہ یورپ، کینیڈا، آسٹریلیا اور ایشیا سمیت متعدد ممالک میں ہزاروں افراد نے احتجاج کیا۔

دنیا نے نسل پرستی اور متعصبانہ رویوں کو مسترد کردیا ہے جس کے بعد اب امریکی صدر بھی پولیس نظام میں اصلاحات لانے پر مجبور ہوگئے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -