گاڑی کی ٹکر سے شہری زخمی، بھارتی ہائی کمیشن کے اہلکار گرفتاری کے بعد رہا

گاڑی کی ٹکر سے شہری زخمی، بھارتی ہائی کمیشن کے اہلکار گرفتاری کے بعد رہا
گاڑی کی ٹکر سے شہری زخمی، بھارتی ہائی کمیشن کے اہلکار گرفتاری کے بعد رہا

  

اسلام آباد(ویب ڈیسک) اسلام آباد پولیس کی جانب سے گاڑی کی ٹکر سے ایک شخص کو زخمی کرنے کےالزام میں گرفتار بھارتی سفارتی عملے کے دو اہلکاروں کو رہا کردیا گیا ہے۔تازہ ترین جاری بیان میں اسلام آباد پولیس بنے کہا کہ بھارتی سفارتی عملے کے اہلکاروں کو رہا کردیا گیا۔ بھارتی سفارتی عملے کے اراکین کو سفارتی استثنیٰ کی وجہ سے رہا کیا گیا۔

تاہم اسلام آباد پولیس کا کہنا ہے کہ بھارتی اہلکاروں کے خلاف تھانہ سیکریٹریٹ اسلام آباد میں مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔پولیس کی جانب سے درج کیے گئے مقدمہ کے مطابق سڑک کراس کرتے ہوئے تیزرفتارگاڑی نے شہری کو ٹکرماری تھی۔ گاڑی کی ٹکر سے شہری شدید زخمی ہوا تھا۔ واقعہ بھارتی اہلکاروں کی غفلت کےباعث پیش آیا تھا۔

ہم نیوز کے مطابق بھارتی اہلکاروں سے 10 ہزارکی جعلی پاکستانی کرنسی بھی برآمد کرلیا گیا۔اس سے قبل اسلام آباد پولیس نے شہری کو گاڑی کے ٹکر سے زخمی کرنے کے الزام میں بھارتی ہائی کمیشن کے دو اہلکاروں کو گرفتار کرلیا تھا۔پولیس نے کہا تھا کہ بھارتی ہائی کمیشن کے اہل کاروں کی گاڑی کی ٹکر سے ایک شخص زخمی ہوا تھا جس کے بعد فرار ہونے والے بھارتی ہائی کمیشن کے اہل کاروں کوموقع پرگرفتارکرلیا گیا۔پولیس نے بتایا تھا کہ بھارتی ہائی کمیشن کے دونوں اہل کاروں کوحراست میں لے لیا۔ بھارتی ہائی کمیشن کے اہل کار گاڑی تیزرفتاری سے چلارہے تھے۔

بعد میں وفاقی پولیس نے بھارتی اہلکاروں کی سفارتی استثیٰ کیلئے ڈی جی پروٹوکول دفتر خارجہ سے رابطہ کرلیا تھا۔وفاقی پولیس نے بتایا تھا کہ دفترخارجہ سے صورتحال کلیئرہونے پراہلکاروں کی حوالگی کا فیصلہ کریں گے۔ دونوں اہلکاروں کے خلاف مقدمے کا اندارج کیا جارہاہے۔خیال رہے کہ 7 اپریل 2018 کو امریکی سفارتکار کی گاڑی کی ٹکر سے اسلام آباد میں نوجوان عتیق بیگ جاں بحق اور اس کا کزن شدید زخمی ہوگیا تھا۔ مقتول نوجوان اسلام ا?باد کے سیکٹر ایف ایٹ سے موٹرسائیکل پر گزر رہا تھا کہ امریکی سفارتکار کی گاڑی نے سگنل توڑتے ہوئے اسے روند ڈالا تھا۔

امریکی سفارتخانے کی گاڑی ملٹری اتاشی کرنل جوزف چلا رہا تھا۔ سفارتی استثنیٰ کے باعث پولیس نے امریکی اہلکار کو سفارتخانے واپس جانے کی اجازت تو دے دی تاہم گاڑی کو تھانہ کوہسار منتقل کردیا گیا تھا۔حادثے کا مقدمہ مقتول عتیق بیگ کے والد محمد ادریس کی مدعیت میں کوہسار تھانے میں درج کیا گیا تھا۔14 مئی کو پاکستانی نوجوان کو اپنی گاڑی تلے کچل کر ہلاک کرنے والے امریکی ملٹری اتاشی کرنل جوزف امریکی ایئر فورس کے خصوصی سی ون تھرٹی کے ذریعے نور خان ایئر بیس سے قطر چلے گئے تھے۔

نجی نیوز چینل کے مطابق کرنل جوزف کو واپس بھجوانے کا فیصلہ اسلام آباد ہائی کورٹ کے احکامات کی روشنی میں کیا گیا تھا۔ ذرائع کا یہ بھی کہنا تھا کہ کرنل جوزف کو مکمل سفارتی استثنیٰ حاصل تھا اور امریکہ نے پاکستانی درخواست کے باوجود سفارتی استثنیٰ ختم نہیں کیا تھا۔سفارتی ذرائع نے کہا تھا کہ امریکہ نے کرنل جوزف کے خلاف انتظامی اور فوجداری مقدمہ کرنے کی یقین دہانی کرائی تھی اس لیے کرنل جوزف کے خلاف مقدمے کا مکمل ریکارڈ بھی امریکہ کے حوالے کر دیا گیا۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -