صدارتی ریفرنس:حکومت کے ہاتھ بالکل صاف ہیں،ایف بی آر کے معاملے پر فیصلے کی ضرورت نہیں ، فروغ نسیم

صدارتی ریفرنس:حکومت کے ہاتھ بالکل صاف ہیں،ایف بی آر کے معاملے پر فیصلے کی ...
صدارتی ریفرنس:حکومت کے ہاتھ بالکل صاف ہیں،ایف بی آر کے معاملے پر فیصلے کی ضرورت نہیں ، فروغ نسیم

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)صدارتی ریفرنس کےخلاف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی درخواست پرحکومتی وکیل بیرسٹر فروغ نسیم نے دلائل دیتے ہوئے کہاکہ حکومت کے ہاتھ بالکل صاف ہیں،ایف بی آر کے معاملے پر فیصلے کی ضرورت نہیں ،کسی سے اثاثے چھپانے پر وضاحت مانگی جاتی ہے۔

نجی ٹی وی دنیا نیوزکے مطابق سپریم کورٹ میں صدارتی ریفرنس کےخلاف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی درخواست پرسماعت جاری ہے، جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں سپریم کورٹ کا10رکنی لارجر بینچ سماعت کر رہا ہے۔حکومتی وکیل بیرسٹر فروغ نسیم نے دلائل دیتے ہوئے کہاکہ حکومت کے ہاتھ بالکل صاف ہیں،ایف بی آر کے معاملے پر فیصلے کی ضرورت نہیں ، فروغ نسیم نے کہاکہ کسی سے اثاثے چھپانے پر وضاحت مانگی جاتی ہے،جوڈیشل کونسل کے سامنے کوئی پٹیشن نہیں ،پانامااورخواجہ آصف کیس میں اثاثے چھپانے پررٹ پٹیشن دائرہوئی۔

عدالت نے کہاکہ یہی سوال ہے کونسل کس قانون کے تحت جج سے اہلیہ کی جائیدادپوچھ سکتی،فروغ نسیم نے کہاکہ منفی مہم چاہے ہمارے خلاف ہویادرخواست گزارکے،قابل مذمت ہے،جائیداد جج کی ہے، ٹرائل پر ہم ہیں،بتا نہیں سکتا کس صورتحال سے گزررہا ہوں۔

جسٹس مقبول باقر نے کہاکہ اندازہ کریں جج کس عذاب سے گزر رہے ہوں گے،حکومتی وکیل بیرسٹرفروغ نسیم نے کہاکہ الزام ہم پر لگ رہا ہے، جسٹس مقبول باقر نے کہاکہ یہ بھی دیکھیں کیسے پریس کانفرنس ہوئی تھی،ہمارا ملک کسی بحران کا متحمل نہیں ہو سکتا، آپ کے جذبات کو سمجھتے ہیں،ان باتوں کونظراندازکریں۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -