”چیئرمین سینٹ کے دفتر میں یاسمین راشد کے بیان پر بات ہوئی تو دیگر صوبوں کے سینیٹرز نے کہا کہ۔۔۔“ حامد میر نے انکشاف کر دیا

”چیئرمین سینٹ کے دفتر میں یاسمین راشد کے بیان پر بات ہوئی تو دیگر صوبوں کے ...
”چیئرمین سینٹ کے دفتر میں یاسمین راشد کے بیان پر بات ہوئی تو دیگر صوبوں کے سینیٹرز نے کہا کہ۔۔۔“ حامد میر نے انکشاف کر دیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) معروف صحافی و اینکرپرسن حامد میر نے انکشاف کیا ہے کہ مختلف صوبوں سے تعلق رکھنے والے سینیٹرز کے مطابق ڈاکٹر یاسمین راشد کی بات صرف لاہوریوں پر نہیں بلکہ ان کے صوبے کے لوگوں پر بھی اپلائی ہوتی ہے اور کوئی اس وباءکو سنجیدہ نہیں لے رہا۔

تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے حامد میر نے کہا کہ آج ڈاکٹر یاسمین راشد کے بیان پر چیئرمین سینیٹ کے دفتر میں چند سینیٹر حضرات سے میری بات ہو رہی تھی جن کا تعلق مختلف صوبوں سے تھا، اس دوران مجھے بلوچستان کے ایک سینیٹر نے کہا کہ یاسمین راشد نے جو کہا وہ صرف لاہور کے لوگوں پر ہی اپلائی نہیں ہوتا بلکہ ہمارے صوبے میں بھی یہی حال ہے اور کوئی اسے سیریس نہیں لے رہا، ایسی ہی بات سندھ اور خیبرپختوانخواہ کے سینیٹرز نے بھی کی۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ مارچ کا مہینے میں ابھی کورونا وائرس کی جب ابتداءہوئی تھی تو اس سارے عرصے میں یاسمین راشد بار بار یہ کہتی رہیں کہ پنجاب کے حالات خراب ہو جائیں گے اور لاہور وبائی مرکز بنے گا لیکن ہماری سیاسی لیڈرشپ، خاص طور پر وزیراعظم اور اپوزیشن جماعتیں ایک پیج پر نہیں آ سکیں اور اس وجہ سے کنفیوژن ہوئی۔

مزید :

قومی -