حلیم عادل شیخ سندھ حکومت پر برس پڑے ،مراد علی شاہ سے حساب بھی مانگ لیا

حلیم عادل شیخ سندھ حکومت پر برس پڑے ،مراد علی شاہ سے حساب بھی مانگ لیا
حلیم عادل شیخ سندھ حکومت پر برس پڑے ،مراد علی شاہ سے حساب بھی مانگ لیا

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن ) سندھ اسمبلی کے اپوزیشن لیڈر حلیم عادل شیخ نے صوبائی حکومت پرتنقید کرتے ہوئے کہا کہ سندھ کابجٹ غریب دشمن بجٹ ہے، تھرمیں لگائے گئے منصوبے پایہ تکمیل تک نہیں پہنچے، سندھ میں غریب کی فلاح کیلئے کچھ نہیں کیاگیا،وزیرا علیٰ مراد علی شاہ کو حساب دینا ہوگا۔

کراچی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے حلیم عادل شیخ کا کہنا تھا کہ وزیرا علیٰ سندھ مراد علی شاہ کاقلم کسی مفادعامہ کیلئے چلتے نہیں دیکھا،پیپلز پارٹی والے سندھ کارڈاوراجرک کے پیچھے چھپناچاہتے ہیں، گزشتہ 13 سال میں صرف زرداری گروپ نے ترقی کی، سندھ میں سبسڈیزبھی زرداری گروپ کودی گئیں۔

ان کا کہنا تھا کہ سندھ میں تعلیم کانظام درہم برہم ہے،سندھ حکومت کی جانب سے 1450ارب روپے تعلیم کے نام پر خرچ کیا گیا مگر تعلیم کا جو حال ہے وہ سب نے دیکھ لیا،سکولوں میں بھینسیں بندھی ہوئی ہیں،صحت پر 768ارب روپے خرچ کرنے کے باوجود کتے کے کاٹنے کی ویکسین نہیں ملتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ سندھ کو 13سال میں آٹھ ہزار912ارب روپے ملے ہیں،سندھ حکومت نے ترقیاتی مد میں 1646ارب روپے کا خرچ دکھا یا ،سات ہزار ارب روپے غیر ترقیاتی مد میں خرچ کئے گئے ہیں، ہرسال صوبائی اخراجات میں اضافہ ہوا۔

حلیم عادل نے کہا کہ سندھ میں نہ امن ہے اور نہ امان، ڈاکو راج قائم ہے اور سرعام لوگوں کو ماردیا جاتا ہے،آج کراچی کا ذکردنیا کے 10گندے ترین شہروں میں آتا ہے،90فیصد ریونیو دینے والے شہر کو کچرا کنڈی بنادیا گیا ہے۔

مزید :

قومی -سیاست -علاقائی -سندھ -کراچی -