یوسی 128جابجا گندگی ،مچھروں کی بھرمار،مکین سراپا احتجاج

یوسی 128جابجا گندگی ،مچھروں کی بھرمار،مکین سراپا احتجاج
یوسی 128جابجا گندگی ،مچھروں کی بھرمار،مکین سراپا احتجاج

  

لاہور (چوہدری حسنین+رانا جاوید اقبال) یونین کونسل 128کے مکین علاقہ میں گندگی کے ڈھیروں، مچھروں، ٹوٹی سڑکوں، ابلتے گٹروں سے پریشان حال سراپا احتجاج۔ یونین کونسل 128کے مکینوں کا کہنا تھا کہ علاقے میں نہ تو بجلی آتی ہے اور نہ ہی گیس اور گندگی کے اتنے اتنے بڑے ڈھیر لگے ہوئے ہیں کہ وہاں پر مختلف قسم کے حشرات جنم لیتے ہیں مثلاً مچھر، مکھیاں اور دوسری خطرناک قسم کی حشرات جس کی وجہ سے علاقے میںمہلق بیماریاں جیسے ڈینگی وائرس، ملیریا، ٹائفائیڈ اور دوسری الرجی وغیرہ جیسی بیماریاں پیداہوتی ہیں۔ محمد ارشد کا کہنا تھا کہ یہاں پر نہ کوئی ایم پی اے آتا ہے اور نہ ہی کوئی ایم این اے جب سے ووٹ لے کر گئے ہیں انہوں نے یہاں آکر ہمارا حال تک نہیں دیکھا کہ ہم مرگئے ہیں یا زندہ ہیں اور جب ووٹ لینے کا وقت آئے گا تو پھر گھر گھر جاکر لوگوںسے مسائل پوچھتے ہیں اور کہتے ہیں کہ آپ نے ہمیں پہلے کیوں نہیں بتایا ہم ابھی حل کروادیتے ہیں۔ محمد علی حسین کا کہنا تھا کہ یہ سب چور ہیں حکومت کی طرف سے جو بھی گرانٹ آتی ہے وہ خود ہضم کرجاتے ہیں اور علاقے کے لوگ ان کی طرف دیکھتے رہتے ہیں کہ کب یہ ہمارے مسائل حل کریں گے۔ ارشد علی کا کہنا تھا کہ یہاں تقریباً 8ماہ سے گلیوں میں سیوریج ڈالنے کا کام شروع ہے لیکن ابھی تک کوئی پتہ نہیں کہ کب تک مکمل ہوگا نہ تو یہ اس کو مکمل کرتے ہیں اور نہ ہی کسی کو کرنے دیتے ہیں۔ لوگوں کو گزرنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور جب بارش ہوجائے تو گلیاں پانی سے بھرجاتی ہیں جیسے نہر کا سماں پیش کرتی ہیں۔ ہماری ان سے التماس ہے کہ مہربانی کرکے ان کو مکمل کروایا جائے۔ محمد رفیع کا کہنا تھا کہ گندگی کے ڈھیروں کی وجہ سے علاقہ میں مچھروں کی بھرمار ہے جس کی وجہ سے علاقہ میں بیماریوں کی وجہ سے لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ ہمارے بچے آئے روز بیمارہوتے رہتے ہیں اور ہمارے پاس اتنی جمع پونجی بھی نہیں ہے جس سے ہم بچوں کا علاج کرواسکےں ہماری اعلیٰ حکام سے اپیل ہے کہ علاقہ میں صفائی کا نظام بہتر بنایا جائے اور گندگی کے ڈھیروں کو ختم کروایاجائے تاکہ ہم سکھ چین کے ساتھ جی سکے۔ف

مزید : الیکشن ۲۰۱۳