ن لیگ نے نگران وزیراعظم کیلئے حکومتی نام مسترد کردیے،بلوچستان کے شفاف نگران سیٹ اپ اور گورنروں کی تبدیلی کے مطالبے کا فیصلہ

ن لیگ نے نگران وزیراعظم کیلئے حکومتی نام مسترد کردیے،بلوچستان کے شفاف نگران ...
ن لیگ نے نگران وزیراعظم کیلئے حکومتی نام مسترد کردیے،بلوچستان کے شفاف نگران سیٹ اپ اور گورنروں کی تبدیلی کے مطالبے کا فیصلہ

  



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) مسلم لیگ ن نے حکومت کی طرف سے نگران وزیراعظم کیلئے دیئے گئے تینوں نام مسترد کرنے اور سندھ و بلوچستان میں مک مکا قبول نہ کرنے کا حتمی فیصلہ کرلیاہے جبکہ گورنروں کے حوالے سے اپنے تحفظات وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کے سامنے رکھنے کا بھی عندیہ دیاگیاہے ۔ ذرائع کے مطابق وزیراعظم سے نگران سیٹ اپ کے حوالے سے ملاقات سے قبل وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کی زیرصدارت مسلم لیگ ن کا غیر رسمی مشاورتی اجلاس ہوا جس میں چوہدری نثارعلی خان ، راجہ ظفرالحق اور اسحاق ڈار و دیگر نے شرکت کی ۔ اجلاس کے دوران بیرون ملک موجود ن لیگ کے قائد میاں نواز شریف سے بھی مشاورت کی گئی ۔ میاں نواز شریف نے پارٹی رہنماﺅں کو ہدایت کی کہ ایساکوئی قدم نہ اُٹھایاجائے انتخابات کے انعقاد پر اثرانداز ہو،آئینی طریقہ اختیار کیاجائے، متفقہ طورپر نگران سیٹ اپ لانا احسن اقدام ہوگا، ن لیگ نے باصلاحیت اور ایماندار لوگوں کے نام دیئے ۔ اجلاس مین فیصلہ کیا گیا کہ چاروں صوبائی گورنرسیاسی ہیں اور وہ شفاف انتخابات کی راہ میں رکاوٹ بن سکتے ہیں ، وزیراعطم کو گورنر وں اور بلوچستان کی صورتحال سے متعلق اپوزیشن کے تحفظات سے آگاہ کیا۔ ن لیگ نے فیصلہ کیاکہ حکومت کی طرف سے دیئے گئے تینوں نام عبدالحفیظ شیخ ، میر ہزار کھوسواور عشرت حسین کا نام جبکہ بلوچستان اور سندھ میں مک مکاقبول نہیں ہوگا، بلوچستان میں قائد حزب اختلاف نہیں اور بعدازاں وزیراعلیٰ شہباز شریف وزیراعظم کے ظہرانے میں شرکت کیلئے روانہ ہوگئے ۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں


loading...