مہنگے اموں ٹریکٹر درآمد کرنے کی حکومتی پالیسی پر اقتصادی ماہرین کے تحفظات

مہنگے اموں ٹریکٹر درآمد کرنے کی حکومتی پالیسی پر اقتصادی ماہرین کے تحفظات

لاہور(کامرس رپورٹر)اقتصادی ماہرین نے وفاقی و صوبائی حکومتوں کے بیرون ملک سے ٹریکٹر اور دیگر مشینری درآمدکے فیصلے پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ فیصلہ پاکستان کی مقامی صنعت کیلئے زہر قاتل ثابت ہوگا ، صوبائی حکومت کا بیلاروس اوردیگر ملکوں کے ساتھ کیے جانیوالے ٹریکٹر خریداری کے معاہدے کافیصلہ مقامی ٹریکٹر سازی صنعت کو نقصان پہنچانے کے مترادف ہے،جسے فوری طور پر واپس لیا جائے۔ ذرائع کے مطابق اس وقت مقامی ٹریکٹر سازانڈسٹری اور پرزہ جات بنانے والے اداروں نے اپنی انڈسٹری میں بہت بڑی انویسٹمنٹ کی ہے تاکہ اپنی پراڈکٹس کو بین الاقوامی معیار کے مطابق بنایا جا سکے۔اس مثبت صورتحال میں ٹریکٹر اور پرزہ جات بنانے والے ادارے اس بات کے منتظر ہیں کہ انہیں حکومت کی طرف سے ایسی مراعات دی جائیں جس سے نا صرف برآمد میں مزید اضافہ ہوبلکہ ملک کیلئے قیمتی زرمبادلہ بھی حاصل ہو۔جس سے ملکی معیشت میں بہتری کے ساتھ ساتھ روزگار کے نئے مواقع بھی پیدا ہوں گے۔ تجزیہ کاروں کے مطابق وفاقی اورصوبائی حکومتوں کو ٹریکٹرسازی کی مقامی صنعت کو تباہی اور ملکی معیشت کو نقصان سے بچانے کیلئے ٹریکٹر کی درآمد جیسے فیصلوں کوفوری طور پر واپس لینا چاہئے ۔

مزید : کامرس


loading...