سکیورٹی خدشات والدین کا گارڈین عدالتوں میں بچوں کے ساتھ ملنے سے انکار

سکیورٹی خدشات والدین کا گارڈین عدالتوں میں بچوں کے ساتھ ملنے سے انکار

 لاہور(نامہ نگار)سکیورٹی خدشات کے پیش نظر والدین نے سول کورٹ میں واقع چائلڈ پلے روم میں بچوں سے ملاقات کرنے سے انکار کردیا، والدین کی جانب سے بچوں کی گھروں میں ملاقات کرانے کے لئے درخواستیں بھی دائر کردی گئی ہیں ،گارڈین عدالتوں نے اس حوالے سے فریقین کے وکلا ء کو بحث کے لئے طلب کرلیا ۔سول کورٹ میں گھریلو جھگڑوں سے متاثر ہونے والے بچوں کے حصول کے لئے دائر دعوؤں کی تعداد بڑھنے پر ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج عابد حسین قریشی نے گارڈین ججوں کی عدالتوں کی تعداد کو 7کررکھا ہے ،سیشن جج نے تمام گارڈین ججوں کو ہدایات جاری کی ہیں کہ وہ بچوں کے مقدمات کو جلد سے جلد نمٹانے کی کوشش کریں تاہم گارڈین ججوں کی عدالتوں میں زیر سماعت مقدمات میں والدین عدالت کے حکم پر پلے روم سول کورٹ میں بچوں سے ملاقات کرتے تھے، والدین کی جانب سے گزشتہ روزگارڈین ججوں کو درخواستیں دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا گیا ہے کہ سول کورٹ میں سکیورٹی خدشات ہیں ،ان کی اور ان کے بچوں کی زندگیاں خطرے میں پڑسکتی ہیں وہ ایسے ماحول میں ذہنی طور پر پریشانی کے عالم میں اپنے بچوں سے ملاقات نہیں کرسکتے ہیں تاہم عدالت سے استدعا ہے کہ بچوں سے گھر میں ملاقات کرانے کا حکم دیا جائے۔دوسری جانب والدین کی جانب سے سیکیورٹی خدشات کا اظہار کرنے پر سیشن جج کی ہدایت پر گارڈین جج ون خالد سلیم سوہل نے چائلڈ پلے روم کا دورہ کیااورسکیورٹی اہلکاروں کو بچوں سے ملاقات کے دوران سکیورٹی سخت کرنے کی ہدایت کی ہے،فاضل جج نے پلے روم سول کورٹ کا دورے کے دوران سیکیورٹی انتظامات کا بھی جائزہ لیا،فاضل جج کا کہنا ہے کہ والدین نے جو خدشات ظاہر کیے ہیں ان کو دور کرنے کے لئے خصوصی اقدامات کئے جائیں گے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...