کتوں کے ساتھ رقاص بچے کی کہانی ، مصری معاشرہ ہِل کر رہ گیا

کتوں کے ساتھ رقاص بچے کی کہانی ، مصری معاشرہ ہِل کر رہ گیا
 کتوں کے ساتھ رقاص بچے کی کہانی ، مصری معاشرہ ہِل کر رہ گیا

  


قاہرہ (مانیٹرنگ ڈیسک)مصری دارالحکومت قاہرہ کی سڑکوں پر پھرنے والے بچے عبدالرحمن کی کہانی ہر دردِ دل رکھنے والے انسان کو تڑپا دیتی ہے۔ عبدالرحمن کو اْس کے باپ نے اپنی دوسری بیوی کی خوشی کی خاطر گھر سے نکال دیا جس کے نتیجے میں اب وہ چند کتوں کے ساتھ رہتا ہے بلکہ سڑکوں پر ان کتوں کے ساتھ رقص کا مظاہرہ کر کے اپنے گزر بسر کے لیے آمدنی کا بندوبست کرتا ہے۔عربی روزنامے "الوم السابع" میں شائع ہونے والی اس کہانی نے کروڑوں مصریوں کے دلوں کو ہِلا ڈالا۔ ان میں ہزاروں افراد نے اس 11 سالہ عبدالرحمن کے لیے میزبانی کی پیش کش کی ہے۔ عبدالرحمن کا کہنا ہے کہ جانور اْس کے باپ سے زیادہ محبت کرتے ہیں۔ ننھے مصری بچے کی خواہش ہے کہ اس کو پیدائش کا سرٹفکیٹ ملک جائے اور مسقبل میں وہ مصور بننا چاہتا ہے۔عبدالرحمن قاہرہ کے وسط میں واقع "طلعت حرب" اسکوائر پر رہتا ہے۔ پانچ کتے اس کے ساتھ ہر دم رہتے ہیں۔ جب وہ ان کتوں کے ساتھ سڑک پر رقص کرتا ہے تو راہ گزرنے والے اْسے تماشہ دکھانے والا سمجھ کر کچھ رقم دے دیتے ہیں جس سے وہ اپنے اور ان کتوں کے لیے خوراک کا بندوبست کر لیتا ہے۔ عبدالرحمن کے باپ نے دوسری بیوی کی خوشی کے لیے 3 برس قبل اپنے بیٹے کو گھر سے نکال دیا تھا۔ اس کے نتیجے میں ننھے عبدالرحمن نے جوتے پالش کرنے اور سڑکوں پر رومال بیچنے کا کام کیا۔ اس نے ایک پرانے سے گھر میں پناہ کے لیے ایک چھوٹا سے کمرہ کرائے پر حاصل کیا مگر مالکِ مکان خاتون نے اس کی ساری جمع پونجی 360 درہم چوری کر کے اسے گھر سے نکال کر پھر سے سڑک پر پہنچا دیا۔عبدالرحمن کا کہنا ہے کہ وہ کتوں کے درمیان اپنی زندگی سے خوش اور راضی ہے بلکہ یہ کتے اْس پر انسانوں سے زیادہ مہربان ہیں اور جو شخص بھی عبدالرحمن کو نقصان پہنچانے کی کوشش کرتا ہے یہ اْس پر حملہ کر دیتے ہیں۔عبدالرحمن کے مطابق اس نے اپنی ماں کو صرف دو مرتبہ دیکھا جس کے بعد وہ اس دنیا سے رخصت ہو گئی۔ عبدالرحمن کو مصوری سے عشق ہے اور وہ تعلیم مکمل کرنے اور مصور بننے کی خواہش رکھتا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4


loading...