چھ مسلم ممالک پر سفری پابندیوں کا ٹرمپ آرڈر آج موثر ،شہری آزادیوں کے حامیوں کا احتجاج

چھ مسلم ممالک پر سفری پابندیوں کا ٹرمپ آرڈر آج موثر ،شہری آزادیوں کے حامیوں ...

واشنگٹن (اظہر زمان، ) صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے چھ مسلم ممالک کے شہریوں پر سفری پابندی کا جو دوسرا نسبتاً نرم ایگزیکٹو آرڈر جاری کیا تھا وہ جمعرات 16 مارچ کو موثر ہوگا۔ تاہم اس بات کا قوی امکان ہے کہ لاگو ہونے سے قبل ہی عدلیہ اس کے خلاف حکم امتناعی جاری کر دے۔ اس کے علاوہ سینیٹ میں بھی ٹرمپ آرڈر کو کالعدم قرار دینے کیلئے ایک بل ڈیمو کریٹک ارکان کی طرف سے پیش ہوچکا ہے۔ 100 کے ایوان میں بل منظور ہونے کیلئے 51 کی حمایت سے بل منظور ہوسکتا ہے۔ اس دوران شہری آزادیوں کے حامیوں نے آرڈر کے خلاف عدالتی فیصلہ لینے اور اس کے خلاف احتجاج کرانے کیلئے مظاہروں کا نیا سلسلہ شروع کر دیا ہے۔ یہ آرڈر آج 16 مارچ سے لاگو ہونا تھا۔ اس دوسرے آرڈر کو بھی تین ریاستوں میں چیلنج کیا جاچکا ہے جن میں ہوائی، میری لینڈ اور شمال مغربی ساحل پر واقع واشنگٹن شامل ہیں۔ ہوائی اور میری لینڈ میں آج عدالتوں میں سماعت ہوگی جبکہ تیسری ریاست میں سماعت کی تاریخ کا اعلان نہیں ہوا۔ٹرمپ آرڈر کا اگر اطلاق ہوگیا تو پھر چھ مسلم ممالک کے شہریوں کی امریکہ آمد پر 90 دن کی پابندی لگ جائے گی جس کا آغاز 15 مارچ سے ہوگا۔ نئے آرڈر میں مذہبی اقلیتوں کو استثنیٰ دیا گیا ہے۔ آرڈر کے موثر ہونے کی صورت میں موجودہ سال امریکہ میں آنے والے مہاجروں کی تعداد ایک لاکھ دس ہزار سے کم ہوکر پچاس ہزار ہو جائے گی۔ ٹرمپ انتظامیہ نے یہ ہدایت بھی کی ہے جن ممالک پر پابندی نہیں لگی، ان کے شہریوں کی سخت سکروٹنی کی جائے اور ان کیلئے امریکہ میں آمد اور روانگی کا پروگرام بحال کرکے ان کی مناسب تصدیق کرنے کے بعد انہیں امریکہ داخل ہونے دیا جائے۔صدر ٹرمپ کا ایگزیکٹو آرڈر امریکی وقت کے مطابق بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب 12 بجے سے لاگو ہو جائے گا جس کے پیش نظر شہری آزادیوں اور انسانی حقوق کی حامی تنظیموں کے ارکان اور وکلاء نے وفاقی عدالتوں سے حکم امتناعی لینے اور آرڈر کے خلاف احتجاج کو منظم کرنے کیلئے سرگرمی سے کام شروع کر دیا ہے۔ ’’امریکن سول برٹیز یونین‘‘ نے ٹرمپ آرڈر کو امتیازی قرار دیا ہے جبکہ وفاقی حکام کا موقف یہ ہے کہ یہ کارروائیاں امریکہ کو دہشت گردی سے بچانے کیلئے کی جا رہی ہیں۔ امریکی وزارت خارجہ کے ذرائع نے بتایا ہے کہ پابندی کی تاریخ سے قبل گزشتہ ہفتے 37 ہزار سے زائد مہاجرین امریکہ داخل ہوئے ہیں۔

مزید : علاقائی


loading...