ایم اے کی طالبہ کے دعوے پر 16سال بعد پنجاب یونیورسٹی کے خلاف 8لاکھ روپے کی ڈگری

ایم اے کی طالبہ کے دعوے پر 16سال بعد پنجاب یونیورسٹی کے خلاف 8لاکھ روپے کی ڈگری

لاہور(نامہ نگار) سول جج چودھری اشتیاق نے ایم اے پارٹ ون کی طالبہ وجیہ عروج کے دعوے پر پنجاب یونیورسٹی کے خلاف16 سال بعد 8 لاکھ روپے کی ڈگری جاری کردی ہے ۔سول کورٹ میں 1999ء میں ایم اے پارٹ ون کی طالبہ وجیہ عروج نے پنجاب یونیورسٹی کے خلاف غلط رزلٹ کارڈ جاری کرنے اور اس کا سال ضائع کرنے پر 27 لاکھ روپے ہرجانے کا دعوےٰ دائر کررکھا تھا،پنجاب یونیورسٹی کی طرف سے دعوے میں مختلف پیچیدگیاں پیدا کی گئیں جس کے باعث مذکورہ دعویٰ 16سال تک زیرسماعت رہا۔گزشتہ روزسول جج نے پنجاب یونیورسٹی کے خلاف دائردعوے میں 8لاکھ روپے کی ڈگری کا حکم جاری کرتے ہوئے یونیورسٹی کی طرف سے دائراپیل خارج کردی ہے، طالبہ وجیہ عروج فیصلے کا انتظار کرتے کرتے ملک سے چلی گئی، اس کی عدم موجودگی میں اس کے والد صغیرمحمد پیروی کرتے رہے۔

مزید : علاقائی


loading...