منتخب نمائندوں پر پاکستان بھارت دوستانہ تعلقات قائم کرنے کی بھاری ذمہ داری ہے :سردار ایاز صادق

منتخب نمائندوں پر پاکستان بھارت دوستانہ تعلقات قائم کرنے کی بھاری ذمہ داری ...

اسلام آباد (این این آئی) سپیکر قومی اسمبلی سر دار ایاز صادق نے کہا ہے کہ منتخب نمائندوں پر دونوں ہمسایہ ممالک کے درمیان دوستانہ اور خوشگوار تعلقات قائم کرنے کی بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے۔انہوں نے ان خیالات کا اظہار رکن لوک سبھا ششی تھرور کی سربراہی میں 3رکنی بھارتی پارلیمانی وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔وفد میں رکن لوک سبھا مناکشی لیکھی اور ممبر را جیہ سبھا سواپن داسگپتا شامل تھے۔ملاقات انتہائی خوشگوار ماحول میں ہوئی جس میں دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کشادہ کرنے والے عوامل کے علاوہ دونوں ممالک کی پارلیمانوں کے درمیان رابطوں کو فروغ دینے پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔ ایاز صادق نے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان ہر سطح پر باہمی رابطے اورمذاکرات دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو مستحکم بنانے اور خطے میں امن کے قیام میں اہم کردار ادا کر سکتے ہیں ۔انہوں نے دونوں ممالک کی پارلیمانوں کے درمیان رابطوں کو فروغ دینے کے لیے وفود کے تبادلوں، پاکستان کی قومی اسمبلی اور بھارت کی لو ک سبھا کے درمیان قانون سازی ، تحقیق اور دیگر شعبوں میں تجربات کے تبادلوں کی ضرورت پر زور دیا ۔سپیکر نے کہا کہ پارلیمانی دوستی گروپ پارلیمانی سفارت کاری اور پارلیمانوں کے تعلقات کو فروغ دینے میں اہم کردار ادا کر سکتے ہیں ۔ پاکستان کی قومی اسمبلی میں 90دوستی گروپ قائم کیے گئے ہیں جو نہ صرف محرک ہیں بلکہ پارلیمانی سفارت کاری میں انتہائی فعال کردار ادا کر رہے ہیں ۔ششی تھرور نے کہا کہ پارلیمانی سفارت کاری میں دونوں اقوام جو پہلے ہی مشترکہ ثقافت اور تاریخ سے جڑی ہوئی ہیں کومزید قریب لانے میں اہم کردار ادا کر سکتی ہیں ۔انہوں نے پاکستان اور بھارت کے درمیان پارلیمانی رابطوں کے فروغ کی سپیکر کی تجویز سے اتفاق کیا ۔ملاقات میں پبلک اکاؤنٹس کمیٹی سمیت دیگر قائمہ کمیٹیوں کے کام کو بہتر بنانے کے لیے باہمی تجربات کے تبادلوں پر غور کیا گیا ۔

ایاز صادق

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...