پاک افغان بارڈر بندش ہے مشکلات کا سامنا ہے ،عالمزیب خان

پاک افغان بارڈر بندش ہے مشکلات کا سامنا ہے ،عالمزیب خان

پشاور (کرائمز رپورٹر)پاک افغان پیپلز فورم نے پنجاب اور سندھ میں پشتو بولنے والے افراد کے ساتھ نسلی امتیاز روارکھنے پر تشویش کا اظہارکرتے ہوئے پاکستان بھر کی تمام سیا سی پارٹیوں سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اپنی پا رٹی کی پو زیشن کوپاک افغان بارڈربندش کے حوالے سے واضع کرے گزشتہ روز پشاور پر یس کلب میں پریس کانفرنس کر تے ہو ئے پاک افغان پیپلز فورم کے چےئر مین عالمزیب خان اور دیگرکا کہناتھا کہ پاک افغان طور خم اور چمن کے بارڈر گزشتہ 27 دنوں سے بند ہے جس کی وجہ سے سر حد پار دونوں ممالک کی عوام کو شدید سفری دشواریوں کا سا منا ہے حکومت تاریخی ،مذہبی اور ثقافتی رشتوں کو ملحوظ خاطر رکھتے ہو ئے بارڈر پر دو طرفہ مکالمے کا آغاز کرے حکومت پاکستان ،پولیٹیکل ایجنٹ اور امدادی ادارے طور خم اور چمن میں پھنسے ہو ئے مسافروں کیلئے خوراک،خیمے اور بیت الخلاء جیسی بنیادی انسانی ضرورتوں کو پو ری کر نے کافوری بندوبست کرے اس مو قع پر اُن کے ہمراہ شوکت خان ،جہانزیب خان اور صفدر خان داوڑبھی مو جو د تھے اُنہوں نے کہا کہ دو طرفہ تجارت کے رُکنے کی وجہ سے صرف طور خم بارڈرپر یو میہ دو کروڑ روپے کسٹم آدائیگی کا نقصان ہورہاہے جبکہ سبزیاں اور فروٹ فروش تاجر برادری بھی موجودہ حالات سے شدید مشکلات کا شکار ہیں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...