ترکی نے نیدرلینڈ کا سفارتخانہ بند کرنے کے بعد ایسا قدم اٹھالیا کہ یورپی ملک کی چیخیں نکل گئیں

ترکی نے نیدرلینڈ کا سفارتخانہ بند کرنے کے بعد ایسا قدم اٹھالیا کہ یورپی ملک ...
ترکی نے نیدرلینڈ کا سفارتخانہ بند کرنے کے بعد ایسا قدم اٹھالیا کہ یورپی ملک کی چیخیں نکل گئیں

  


انقرہ (مانیٹرنگ ڈیسک) یورپی ملک نیدر لینڈز بھی کیا یاد کرے گا کہ اس کا پالا کس سے پڑ گیا ہے۔ اس کی جانب سے ترک سیاسی رہنماﺅں کو ریلیوں کی اجازت نہ دینے سے شروع ہونے والا تنازع شدت اختیار کر گیا ہے اور ترکی کا غصہ قابو سے باہر ہونے لگا ہے۔ پہلے تو نیدر لینڈز کا سفارتخانہ بند کیا گیا اور اس کے سفیروں کو ملک سے باہر نکالا گیا، مگر اب صورتحال اس نہج کو پہنچ گئی ہے کہ نیدر لینڈ زکی گائیں بھی ترکی سے واپس بھیج دی گئی ہیں ۔

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق ترکی کی گوشت ایسوسی ایشن نے نیدر لینڈز سے آنے والی گائیں واپس بھیجنے کا فیصلہ کیا، جس کی بنیادی وجہ دونوں ممالک کے درمیان جاری سفارتی تنازع ہی ہے ۔ ترک ریڈمیٹ پروڈیوسرز ایسوسی ایشن کے سربراہ بلند ٹیونک کا کہنا تھا کہ ہولسٹین فریزین نسل کی 40 گائیں پہلے ہی واپس بھیجی جا چکی ہیں ۔ انہوں نے بتایا ” ہم مستقبل میں بھی ہالینڈ سے اینیمل پراڈکٹس منگوانے کا ارادہ نہیں رکھتے۔ ترکی کو اپنے ہاں مقامی جانوروں کی نسل کشی پر توجہ دینا ہو گی۔ ہمارے ہاں اچھی نسل کے جانورپائے جاتے ہیں۔ اگر انہوں نے واپس بھیجی گئی گائیں قبول نہ کیں تو ہم ان کا گوشت بنا کر تقسیم کر دیں گے۔“

ٹرمپ نے ایسا حکم جاری کردیا کہ سن کر آپ کہیں گے امریکی صدر تو بیچارا بے بس ہے، اصل طاقت تو کسی اور کے پاس ہے

یاد رہے کہ دونوں ممالک کے درمیان تنازع کا آغاز اس وقت ہوا جب نیدر لینڈ ز نے ترک وزراءکی سیاسی ریلیوںپر پابندی عائد کردی۔ یہ ریلیاں ترکی میں صدر طیب اردوان کے اختیارات میں توسیع سے متعلق عنقریب منعقد ہونے والے ریفرنڈم کی حمایت میں نکالی جارہی تھیں۔

نیدر لینڈز کے اس اقدام کو ترک صدر نے بدترین فسطائیت قرار دیا جبکہ نیدرلینڈز کی حکومت کو بھی نازی باقیات قرار دیا۔ دونوں ممالک کے درمیاں اعلیٰ سطحی سفارتی تعلقات بھی منقطع کر دیئے گئے ہیں جبکہ نیدر لینڈ ز کا سفارتخانہ بند کرنے کے بعد اس کے سفیر کو ترکی واپس آنے کی جاز ت بھی نہیں دی جارہی۔

مزید : بین الاقوامی


loading...