بھارت میں شادی کی انوکھی تقریب، دلہن بارات لے کر دلہا کو لینے پہنچ گئی

    بھارت میں شادی کی انوکھی تقریب، دلہن بارات لے کر دلہا کو لینے پہنچ گئی

  

راجھستان(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں شادی کی ایک انوکھی تقریب منعقد ہوئی جس میں روایت کے برعکس دلہن اپنی بارات ڈھول باجے کیساتھ لیکر خود دلہا کے گھر پہنچ گئی۔ بھارتی میڈیا کے مطابق راجھستان میں ایک دلہن نے نئی مگر دلچسپ روایت کا آغاز کیا، دلہن کے جوڑے میں ملبوس 25 سالہ جیا شرما بگھی میں بیٹھے اور سیاہ چشمہ لگائے ہوئے ہے جبکہ اس کے رشتہ دار باراتی بنے ہوئے ہیں اور ڈھول کی تھاپ اور شادیانوں پر محو رقص ہیں۔یہ بارات دلہا کے گھر جاکر رکتی ہے جہاں اس انوکھی بارات کا پْرتپاک استقبال کیا جاتا ہے، مہمانوں کی خاطر داری کی جاتی ہے اور مختصر سی تقریب کے بعد دلہا دلہن اپنے نئے گھر کو روانہ ہوجاتے ہیں۔ جیا شرما کے چہرے پر خوشی اور شادمانی کے اثرات نمایاں ہیں۔دلہن جیا شرما نے میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ مرد اور خواتین کے برابر کے حقوق ہیں اگر مرد بارات لاسکتا ہے تو یہی کام عورت کیوں نہیں کرسکتی، راجھستان میں خواتین سے متعلق دقیانوسی خیالات کو تبدیل کرنے کیلئے میں نے اپنے شوہر سے بارات لانے کی خواہش کا اظہار کیا جن کا انہوں نے احترام کیا۔اس موقع پر جیا شرما نے معروف اداکار عامر خان کی فلم دنگل کا مشہور ڈائیلاگ بھی سنایا کہ ’’میری چھوریاں (بیٹیاں) کسی چھورے (لڑکے) سے کم ہیں کیا؟‘اس شادی کی ایک اور خاص بات یہ ہے کہ دلہن والوں سے کسی قسم کے جہیز کا تقاضا نہیں کیا گیا اور دلہن کے لیے تمام سامان کا سسرال والوں نے خود انتظام کیا۔ اہل علاقہ اس انوکھی شادی کو سماج میں تبدیلی کا پہلا قدم قرار دیا۔

بھارت بارات

مزید :

علاقائی -