کوہاٹ‘ بین الصوبائی ڈکیت گرو ہ کے 3 ارکان گرفتار

  کوہاٹ‘ بین الصوبائی ڈکیت گرو ہ کے 3 ارکان گرفتار

  



کوھاٹ (بیورو رپورٹ) کوہاٹ پولیس نے ڈکیتی،قتل،سٹریٹ کرائمز اور دیگر سنگین جرائم کی لاتعداد وارداتوں میں ملوث خطرناک بین الصوبائی گینگ کے تین ارکان کو گرفتار کرلیا ہے۔ملزمان دوران ڈکیتی مزاحمت پر قطر پولیس کے اہلکار کو قتل کرنے کی واردات میں ملوث ہیں جنہیں کراچی سے حراست میں لیا گیا ہے۔ملزمان 13فروری کو کوہاٹ کے علاقہ حیات شہید کالونی میں چھٹی پر گھر آئے قطر پولیس کے اہلکار فیصل ہارون قریشی کو رقم چھیننے کے دوران مزاحمت پر گولی مار کر موت کے گھاٹ اتارنے کے بعد فرار ہوگئے تھے۔واردات کے بعد ملزمان کوہاٹ سے کراچی جاکر روپوش ہوگئے تھے۔ملزمان کراچی اور دیگر اضلاع میں ڈکیتی،قتل،رہزنی،سٹریٹ کرائمز اور دیگر جرائم کی لاتعداد وارداتوں میں ملوث جرائم پیشہ گینگ کے سرگرم ارکان ہیں جنکا کریمینل ریکارڈ مرتب کیا جارہا ہے۔ابتدائی طور پر قطر پولیس اہلکار کے مکمل اندھے قتل کی واردات میں ملوث ملزمان کو جدید سائنسی خطوط پر تفتیش کے دوران سراغ لگاکر سندھ رینجرز کی مدد سے حراست میں لیا گیا ہے۔زیر حراست ملزمان کے قبضے سے واردات میں استعمال ہونیوالے پستول اور موٹر سائیکل بھی برآمد کرکے تحویل میں لئے گئے ہیں۔ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر کوہاٹ کیپٹن(ر)منصور امان نے اے ایس پی صدر دانیال احمد جاویداوردیگرمتعلقہ پولیس افسران کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کو بتایا کہ چھٹی پر گھر آئے قطر پولیس کے اہلکار فیصل ہارون قریشی کو 13فروری کے روز کوہاٹ کچہری چوک میں واقع یونائٹڈ بنک لمیٹڈ سے چیک کیش کرکے ایک لاکھ ستر ہزار روپے کی رقم نکالنے کے بعد نامعلوم ملزمان موٹر سائیکل پر پیچھا کرکے حیات شہید کالونی میں واقع انکے گھر کے قریب رقم چھیننے کی واردات کے دوران مزاحمت پرگولی مار کر قتل کرنے کے بعد فرار ہوگئے۔واقعے کا مقدمہ تھانہ محمد ریاض شہید میں درج کرلیا گیا اور واردات میں ملوث ملزمان کا سراغ لگانے کیلئے تفتیش کو آگے بڑھایا گیا۔ڈی پی او نے بتایا کہ ملزمان کا کھوج لگانے کیلئے اے ایس پی صدر دانیال احمد جاوید، تفتیشی افسر انسپکٹر ناظر حسین،ایس ایچ او تھانہ محمد ریاض شہید اسلام الدین، تفتیشی افسر ریاض حسین اور دیگر ماہر پولیس افسران پر مشتمل سراغ رساں ٹیم تشکیل دی گئی جس نے شبانہ روز محنت اور لگن سے کام کرکے جدید سائنسی خطوط پر تفتیش کرتے ہوئے واردات میں ملوث ملزمان کو ٹریس کیا اور سندھ رینجرز کی مدد سے کراچی میں کامیاب کاروائی کرتے ہوئے ملزمان کو حراست میں لیکر کوہاٹ منتقل کردیا۔ڈی پی او نے بتایا کہ سابقہ ایف آر کوہاٹ کے علاقہ شین ڈھنڈ سے تعلق رکھنے والے ملزمان حیدر زمان ولد غلام محمد،سید محمد ولد نور حکیم اور امیر نواز ولد جنان جو کہ قطرپولیس کے اہلکار فیصل ہارون قریشی کو دوران ڈکیتی مزاحمت پر قتل کرنے کی واردات میں ملوث ہیں کراچی اور دیگر اضلاع میں ڈکیتی،رہزنی،سٹریٹ کرائمز، قتل اور جرائم کی دیگر سنگین وارداتوں میں ملوث خطرناک بین الصوبائی گینگ کے سرگرم ارکان ہیں جنکا کریمینل ریکارڈ مرتب کیا جارہا ہے۔ڈی پی او کیپٹن (ر) منصور امان نے بتایا کہ زیر حراست ملزمان کے قبضے سے ڈکیتی اور قتل کی اس واردات میں استعمال ہونیوالے دو پستول بمعہ کارتوس اور موٹر سائیکل بھی برآمد کرکے تحویل میں لیا گیا ہے۔انہوں نے بتایا کہ زیر حراست ملزمان نے تفتیش میں قتل کی اس واردات میں ملوث ہونے کا اعتراف جرم کرتے ہوئے شریک جرم دیگر تین ساتھیوں کے نام بھی اگل دئیے ہیں اورساتھ ہی کراچی و ملک کے دیگر شہروں میں اس قسم کی متعدد وارداتیں برپا کرنے کا انکشاف کرلیا ہے۔ڈی پی او نے بتایا کہ ملزمان کے ساتھ شریک جرم انکے دیگر تین روپوش ساتھیوں کی تلاش جاری ہے جنہیں بہت جلد گرفتار کرکے قانون کے کٹہرے میں لایا جائے گا۔ڈی پی او نے بتایا کہ زیر حراست ملزمان کو تھانہ محمد ریاض شہید میں درج ڈکیتی اورقطر پولیس اہلکار فیصل ہارون قریشی قتل کے اس مقدمے میں باضابطہ طور پر نامزد کردیا گیا ہے جنہیں مزید تحقیقات کیلئے تفتیشی ٹیم کے حوالے کردیا گیا ہے جن سے دوران تفتیش مزید اہم انکشافات کی توقع کی جارہی ہے۔پریس کانفرنس کے دوران ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر کوہاٹ کیپٹن(ر)منصور امان نے مکمل طور پر اندھے قتل کی اس کیس کو ورک آؤٹ کرنیوالی پولیس ٹیم کی کارکردگی کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے بتایا کہ تھانہ محمد ریاض شہید کی پولیس نے قلیل وقت میں اندھے قتل اور دیگر سنگین وارداتوں میں ملوث ملزمان کو گرفتار کرکے پیشہ ورانہ صلاحیتوں کا لوہا منوایا جو قابل فخر ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر