جامعہ دارالعلوم اسلامیہ چارسدہ میں 71 واں سالانہ دستار بندی کا جلسہ

  جامعہ دارالعلوم اسلامیہ چارسدہ میں 71 واں سالانہ دستار بندی کا جلسہ

  

چارسدہ (بیو رو رپورٹ) قدیم دینی درسگاہ جامعہ دارالعلوم اسلامیہ چارسدہ میں 71 واں سالانہ دستار بندی کا جلسہ منعقد ہوا اس موقع پر عوام کی بڑی تعداد شریک ہوئی اس موقع پر 95 فضلائے کرام کودستار فضیلت دئیے گئے۔ جبکہ شرکاء نے لاکھوں روپے کے چندے دئیے ختم بحاری شریف کی سعادت ادارے کے مہتمم شخ الحدیث مولانا سید محمد گوہر شاہ نے حاصل کی۔تفصیلات کے مطابق 1951سے چارسدہ میں قائم معروف دینی درسگا ہ جامعہ دارالعلو م اسلامیہ چارسدہ میں دستار بندی کے سلسلے میں بڑا جلسہ منعقد ہوا جس سے شیخ الحدیث مولانا سید محمد گوہر شاہ,حافظ حسین احمد,مولانا مفتی محمد ہادی,مولانا غلام محمد صادق،مفتی عبداللہ شاہ،مولاناعبدالروف،شاکرمولاناعبدالواحدمولانا جمیل احمد سمیت دیگر علماء نے خطاب کیا اس موقع پر محمد احمد خان, حاجی ظفر علی خان,حاجی شمس الرحمان شمسی حاجی دانشمند بھی موجود تھے مقررین نے کہا کہ فراغت کے بعد فضلائے کرام نے عملی زندگی میں قدم رکھ دیئے ہیں لہٰذا آپ لوگوں پر اب بڑی ذمہ داریاں عائد کردی گئی ہیں۔ آپ کو حکمت کمال، تدبر اور ہوشیاری سے کام لینا ہوگا اور اسلامی تعلیمیات کو پھیلانے میں اپنا کردار ادا کرناہوگا اْنہوں نے کہا کہ مغرب نے اسلام دْشمن سازشوں کا جال پھیلادیا ہے لیکن علمائے کرام کی موجودگی میں اْن کی ہر سازش ناکام ہوگی۔ طالبان کے مذاکرات اْن کی جیت ہے جس کی مزید کامیابی سے ہمارے خطے میں امن کو تقویت حاصل ہوجائیگی۔ اْنہوں نے کہا کہ کرونا وائرس سے یہ سازش ظاہر کیا جارہا ہے لیکن جو بھی ہو اللہ تعالیٰ کے آخری کتاب قرآن کریم اور احادیث نبوی? میں ہر مرض کا علاج موجود ہے۔ اْمت مسلمہ کو اسلامی احکامات کی طرف متوجہ ہونے کی ضرورت ہے۔ اْنہوں نے کہا کہ اْمت مسلمہ کو متحد ہونے کی ضرورت ہے تاکہ مغربی ایجنڈے کو ناکام بنایا جاسکے۔ اْنہوں نے کہا کہ میراجسم میری مرضی کھلی بے حیائی ہے انسان اللہ تعالیٰ کی مخلوق ہے اور اْن کے احکامات کے مطابق زندگی گزاریں گے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -