لڈن‘ تاجر پر مقدمہ‘ دکانداروں کا احتجاج‘ سڑکوں پر آنیکی دھمکی

  لڈن‘ تاجر پر مقدمہ‘ دکانداروں کا احتجاج‘ سڑکوں پر آنیکی دھمکی

  

لڈن(نامہ نگار)خاتون تشدد کیس میں ملوث پولیس اہلکار انتقامی کاروائیوں پر اترآئے ہیں تفصیل کے مطا بق چند ماہ قبل پولیس تھانہ لڈن نے چوری کے الزام میں لڈن کے رہائشی تاجر سہیل شیخ کو گرفتار کرکے نجی ٹارچر سیل پرمیں رکھ کر مبینہ تشدد کا نشانہ بناتے ہوئے (بقیہ نمبر38صفحہ12پر)

اسکے دونوں گردے ناکارہ کردئیے تھے جس پر آر پی او ملتان وسیم احمد خان نے نوٹس لیا اور تشدد کرنیوالے پولیس اہلکاروں کے خلاف تھانہ لڈن میں ایف آئی آر درج کردی گئی۔ اب تاجر پر تشدد کرنیوالے مقدمہ میں نامزد پولیس اہلکار انتقامی کاروائیوں پر اتر آئیہیں اور پولیس تھانہ لڈن نے ایک کی درخواست پر دوبارہ تاجر سہیل شیخ کے خلاف چوری کا الزام لگاکر جھوٹا مقدمہ درج کردیاہیجس پر مرکزی انجمن تاجران لڈن کے صدر محمد اقبال کملانہ، محمد سعید افضل، مختار احمد سیال۔ محمد علی دولتانہ۔ محمد یار ورک ودیگر عہدیداران نے متاثرہ محمد سہیل کے ہمراہ لڈن پولیس کے خلاف پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہاکہ لڈن پولیس اپنے پیٹی بھائیوں کے خلاف ہونیوالے مقدمہ کی کاروائی سے روکنے کیلئے انتقامی کاروائیاں کررہی ہے اور تاجر کو سنگین نتائج کی دھمکیاں دی جارہی ہیں کہ پولیس اہلکاروں کے خلاف آر پی او ملتان کی ہدائت پر جو مقدمہ درج ہوا تھا اسکی کاروائی روک دو اور صلح کرلو۔ مرکزی انجمن تاجران کے عہدیداران کا مزید کہنا ہے کہ اگر تاجر کے خلاف ہونیوالے جھوٹے مقدمہ کو خارج نہ کیاگیا تو ہم سڑکوں پر نکلیں گے اور پولیس کے خلاف بھرپور احتجاج کریں گے۔ تاجروں نے متاثرہ سہیل کے ہمراہ آر پی او ملتان وسیم احمد خان اور ڈی پی او وہاڑی سمیت دیگر اعلی حکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیاہے۔

دھمکی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -