کورونا وائرس سے بچنے کیلئے اعلٰی قیادت اللہ سے رجوع کرے: سراج الحق

کورونا وائرس سے بچنے کیلئے اعلٰی قیادت اللہ سے رجوع کرے: سراج الحق

  

کراچی/ہالا (نامہ نگار خصوصی) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے آج سے جماعت اسلامی کی جانب سے پورے ملک میں رجو الی اللہ مہم کا آغاز اور تمام بڑی سرگرمیاں ملتوی کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ کورونا وائرس کی وجہ سے آج پوری دنیا میں خوف کا عالم ہے۔ اللہ سے بغاوت پر مبنی نظام اور نعمتوں کی ناشکری کی وجہ سے پوری دنیا خوف اور بھوک و افلاس کا شکار ہے۔جن کا کام قوم کی حفاظت تھا وہ خود غیر محفوظ ہیں۔امریکہ برطانیہ اور چین جیسی بڑی طاقتیں بے بسی کی تصویر بنی ہوئی ہیں۔یہ صورتحال اس بات کا بین ثبوت ہے کہ اللہ کائنات کا حاکم ہے جس کے سامنے کسی کو دم مارنے کی جرا ت نہیں اور وہ تنہا اس پوری کائنات کے نظام کو اپنی مرضی سے چلارہا ہے، اس لیے کورونا وائرس جیسی عالمی وباء کے امتحان و آزمائش سے نکلنے کا واحد حل رجوع الی اللہ ہے۔ صدر،وزیر اعظم اور آرمی چیف کو رجوع الی اللہ کی اس تحریک کی قیادت کرنی چاہئے۔ ہمیں انفرادی و اجتماعی زندگی میں گناہوں سے توبہ و استغفار اور اللہ کی رضا اور فرمانبرداری کا رویہ اپنانا ہوگا۔ حکومت اب میڈیا کو دبانے کی کوشش کر رہی ہے۔ہر حکومت کی کوشش ہوتی ہے کہ عدالت اور صحافت سمیت ہر ادارہ ان کے کنٹرول میں ہو۔ صحافت حکومت کو آئینہ دکھاتی ہے آئینہ توڑنے کی بجائے حکومت اپنی اصلاح کرے،انہوں نے کہاکہ عملی سیاست میں ادارے کمزور اور کچھ لوگ مضبوط ہو رہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں جامعہ منصورہ ہالا میں منعقدہ ختم بخاری کی تقریب سے خطاب اور بعد ازاں میڈیا کے نمائندو سے گفتگوکرتے ہوئے کیا۔تقریب سے نائب امراء اسداللہ بھٹو ڈاکٹرمعراج الہدٰی صدیقی صوبائی امیر محمد حسین محنتی، اورشیخ الحدیث مولانا آغامحمد سمیت صوبائی ذمہ داران اور علمائے کرام بڑی تعداد میں موجود تھے۔سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ حکمران امریکہ روس اور ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کی طرف دیکھنے کی بجائے اپنی ذات سے توبہ و استغفار اوررجوع الی اللہ کا آغاز کریں۔ جب بڑے اچھے ہوں گے تو قوم بھی نیکو کار بن جاِئے گی۔ جب بڑے اصل راستہ چھوڑتے ہیں تو قوم بھی بھٹک جاتی ہے۔ حکمران اللہ اور اس کے رسول? کی طرف دیکھنے کی بجائے مغرب کی طرف دیکھ رہے ہیں۔ حکمران ہروہ کام کررہے ہیں جس سے اللہ ناراض اور مغرب و امریکہ خوش ہو۔جس کی تازہ مثال زینب الرٹ بل ہے۔انہوں نے کہاکہ ہمارے ملک سمیت دنیا میں ظلم وجبر کا نظام چل رہا ہے۔ لادینیت کا سیلاب،بزرگوں کے احترام بچوں پر شفقت میں کمی آئی ہے، اللہ سے بغاوت کے اس نظام کی وجہ سے کورونا سمیت مختلف وباؤں نے سب کو اپنی لپیٹ میں لیا ہوا ہے کیوں کہ اللہ کی لاٹھی بے آواز ہے۔پوری دنیا کو رجوع الی اللہ کرنا ہوگا میرا جسم میری مرضی نہیں جس کی کائنات ہے صرف اس کی مرضی چلے گی۔جماعت اسلامی نے بڑے پروگرام عارضی طور معطل کردیئے ہیں آج سے رجوع الی اللہ مہم شروع کی جائے گی۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ مغرب دینی مدارس کے خلاف جھوٹا پروپگنڈہ کررہا ہے،ہمارے حکمران بھی ان کی ہاں میں ہاں ملا رہے ہیں۔ مدارس اسلام کے قلعے اور اصلاح کے مراکز ہیں۔ تعلیمی بجٹ سے دینی مدارس کو کچھ بھی نہیں دیا جا رہا ہے، حکومتی وزیر مشیر سب سے پہلے اپنے کردارکو درست کریں اور پھر دوسروں کی اصلاح کی بات کریں۔ دینی مدارس کے خلاف سازش کو ناکام بنانا ہمارے ایمان کا حصہ ہے۔ انہوں نے کہاکہ حکومت صرف میڈیا میں موجود ہے اور کہیں بھی نظر نہیں آتی۔جماعت اسلامی آئین کی بالا دستی ا ور اداروں کے استحکام اور خودمختاری کی جدوجہد کررہی ہے تاکہ پاکستان کو حقیقی معنوں میں اسلامی و خوشحال بنایاجا سکے۔دریں اثنا سینیٹر سراج الحق نے اپنا پانچ روزہ دورہ سندھ بھی ملتوی کردیا ہے۔

مزید :

صفحہ اول -