کورونا ویکسین محفوظ ترین کوئی نقصان نہیں، ڈاکٹر یاسمین راشد 

کورونا ویکسین محفوظ ترین کوئی نقصان نہیں، ڈاکٹر یاسمین راشد 

  

فیصل آباد(سپیشل رپورٹر)صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا ہے کہ کورونا وباء کی تیسری لہر جاری ہے جس سے بچنے کیلئے احتیاطی تدابیر اور ایس اوپیز پر عملدرآمد ناگزیر ہے۔ صوبہ بھر میں 60 سال سے زائد عمر کے افراد کی کورونا سے بچاؤ کیلئے ویکسینیشن کا عمل جاری ہے جس کیلئے مجموعی طور پر 114 سنٹرز مکمل فنکشنل اور اب تک 22 ہزار سے زائد بزرگوں کو ویکسین لگائی جاچکی تاہم ذرائع ابلاغ کے نمائندے شہریوں کو احتیاط لازم کا پیغام عام کریں تاکہ مشترکہ کاوشوں سے اس بار بھی وائرس کو پھیلنے سے روکا جاسکے۔انہوں نے یہ بات دورہ فیصل آباد کے دوران فیصل آباد میڈیکل یونیورسٹی میں سینڈیکیٹ اجلاس کے بعد میڈیا نمائندگان سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ڈویژنل کمشنر ثاقب منان، وائس چانسلر میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر ظفر علی چوہدری، سی ای او ہیلتھ ڈاکٹر بلال احمد، ڈی ایچ او ڈاکٹر عطاء المعنم اور دیگر ڈاکٹرز بھی موجود تھے۔صوبائی وزیر صحت نے کہا کہ 55 سال سے زائدعمر کے افراد کورونا سے ممکنہ طور پر متاثر ہو سکتے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ بائیس نئی لیبارٹریز قائم جبکہ ٹیسٹ کی تعداد بڑھائی گئی ہیں۔انہوں نے کہا کہ کورونا کی تیسری لہر کا مقابلہ کرنے کیلئے میڈیا کے تعاون کی ضرورت ہے۔صوبائی وزیر صحت نے بتایا کہ ویکسین کی چار کروڑ چالیس لاکھ خوراکیں مزید پہنچ رہی ہیں۔صوبائی وزیر نے کہا کہ یہ جلسے جلوس کا وقت نہیں،اپوزیشن کو تحفظات ہیں تو آئے اور ہمارے ساتھ بیٹھ کر الیکشن اصلاحات کرے۔انہوں نے کہا کہ ایک اپوزیشن لیڈر کے کورونا لاک ڈاؤن پر نامناسب تبصرے پر افسوس ہوا۔ انہوں نے کہا کہ کورونا ویکسین کا کوئی نقصان نہیں ہم محفوظ ترین ویکسین لگا رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ انتظامی افسران اور پولیس کی بھی جلد ویکسی نیشن کی جائیگی۔بعدازاں صوبائی وزیر نے سمن آباد سپورٹس کمپلیکس میں ویکسینیشن سنٹر کا بھی دورہ کیا اور بزرگ افراد کو ویکیسن لگانے کے عمل کا جائزہ لیا۔

صوبائی وزیر صحت

مزید :

صفحہ آخر -