خورشید شاہ نے پارلیمنٹ سے استعفے دینے کی مخالفت کر دی

     خورشید شاہ نے پارلیمنٹ سے استعفے دینے کی مخالفت کر دی

  

سکھر(آئی این پی)پاکستان پیپلزپارٹی کے مرکزی رہنما خورشید شاہ نے ایک بار پھر استعفے دینے کی مخالفت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس ملک کے مسائل کا حل  استعفے نہیں، اگر ہم  استعفے دے دیتے اور ضمنی و سینیٹ الیکشن کا بائیکاٹ کردیتے تو حکمرانوں کا اس طرح ایکسپوز نہ کرپاتے جس طرح اب ان کو عوام کے سامنے ایکسپوز کیا ہے اور سارے ضمنی الیکشن جیت کر ہم نے ثابت کردیا ہے کہ عوام ہمارے ساتھ ہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے سکھر کی احتساب عدالت میں پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کے لانگ مارچ کا مقصد عوام کو یقین دلانا ہے کہ ہم ان کے دکھ و مسائل میں ساتھ ہیں ان کو جگانے کی ضرورت نہیں ہے قوم جاگی ہوئی ہے صرف اس ملک میں انصاف جاگ جائے تو خود بخود بہت کچھ ہوجائے گا اور کسی کو کچھ کرنے کی ضرورت نہیں پڑے گی اسٹیبلشمنٹ،پارلیمنٹ اور میڈیا سب اپنا کام کرنے لگیں گے ان کا کہنا تھا کہ پہلے ریاست کے تین ستون پارلیمنٹ،عدلیہ اور اسٹیبلشمنٹ تھے مگر میڈیا نے چوتھے ستون کے طور پر خود کو منوایا مگر افسوس ہے کہ اس وقت وہ بھی کمزور ہے، عدلیہ اگر انصاف دینا شروع کرے تو ملک کا کوئی مسئلہ باقی نہیں رہے گا کوئی نوجوان بے روزگارنہیں رہے گا کوئی مزدور بھوکا نہیں سوئے گا پاکستان کی بقاء  اور سالمیت کا اب واحد راستہ انصاف ہے اور اب گیند عدلیہ کی کورٹ میں ہے کہ وہ کیسے انصاف دینا شروع کرتی ہے اگر اس نے انصاف شروع کردیا تو ملک کے 22 کروڑ عوام اس کے پیچھے کھڑے ہونگے ان کا کہنا تھا کہ ملک میں جسٹس منیر سے لے کر آج تک جتنے واقعات پیش آئے ہیں ان کی ساری بات عدلیہ پر آتی ہے۔

خورشید شاہ 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -