شہبا ز گل پر انڈوں اور سیاہی سے حملہ، 3ملزم گرفتار، لاہور ہائیکورٹ کا کارروائی کا حکم 

شہبا ز گل پر انڈوں اور سیاہی سے حملہ، 3ملزم گرفتار، لاہور ہائیکورٹ کا ...

  

 لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہورہائیکورٹ میں پیشی کے موقع پر وزیراعظم کے معاون خصوصی شہبازگل کے منہ پرموقع پر مسلم لیگ (ن)کے کارکنوں نے سیاہی پھینک دی،کارکنوں نے ان پرانڈے جبکہ ان کی گاڑی پر جوتے بھی پھینکے،تحریک انصاف کے کارکنوں نے سیاہی پھینکنے والے مسلم لیگ (ن) کے کارکن پرتشدد کرکے اسے لہولہان کردیا،معاون خصوصی شہباز گل ہائیکورٹ میں ترک کمپنی کے ملازم کے خلاف درج مقدمہ کے اخراج کے حوالے سے کیس کی سماعت کیلئے پیش ہوئے تو اس دوران مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں نے پہلے ان پرانڈے پھینکے لیکن تحریک انصاف کے کارکنوں کے گھیرے میں ہونے کے باعث نے شہباز گل انڈوں سے محفوظ رہے جس کے بعد وہ کمرہ عدالت میں جارہے تھے کہ ان پر سیاہی پھینک دی گئی جو ان کے چہرے اور ہاتھوں پر لگی، انہوں نے اپنے بچاؤ کے لئے چھتری کا انتظام کررکھا تھا،سیاہی چھتری پر بھی گری،شہباز گل نے اپنا ماسک اتار کر سیاہی صاف کی جس کے بعد تحریک انصاف کے کارکنوں نے سیاہی پھینکنے والی مسلم لیگ (ن) کے کارکن کو قابو کر لیا جس پر احاطہ عدالت میں گھمسان کی لڑائی ہوئی۔ جھگڑے کے دوران سیاہی پھینکنے والا ن لیگی کارکن لہولہان ہوگیا، مسلم لیگ کی خواتین کارکن نعرے بازی کرتی رہیں اورپولیس سے الجھتی رہیں۔ سابق ایم پی اے فرزانہ بٹ نے پولیس اہلکار کو تھپڑ جڑ دیا جبکہ تنویر چودھری نے شہباز گل کی گاڑی پر جوتا اچھال دیا، ہنگامہ آرائی کے بعد پولیس زخمی شخص سمیت مسلم لیگ (ن) کے دیگر کارکنوں کو گاڑی میں بٹھا کرلے گئی،شہبازگل نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں نے سیاہی پھینکی ہے یہ ان کے اپنے کالے کرتوتوں کی سیاہی ہے،یہ غنڈہ گردی ہے،ہم عمران خان کے سپاہی ہیں ہم ایک تھپڑ کے جواب میں دس تھپڑ نہیں ماریں گے،اپوزیشن سینیٹ میں الیکشن میں ہارنے کے بعد بوکھلاہٹ کا شکار ہو گئی ہے۔ انہوں نے مریم نواز کو چیلنج کیا کہ اگر اب ایسی حرکت ہوئی تو وہ ان کے گھر کے سامنے آکر پریس کانفرنس کروں گا، ان کے گھر سے پانی لے کر منہ دھوؤں گا،مجھ پر ان لوگوں نے اپنے کرتوتوں کی سیاہی پھینکی ہے،اس ملک میں نواز شریف اور مریم نواز کی سیاست ختم ہو چکی ہے اب نواز شریف الطاف حسین کی طرح بیرون ملک بیٹھ کر ہی یہ سب کر سکتے ہیں،انہوں نے مزید کہا کہ مصدقہ دستاویزات کی بنیاد پر میں نے مقدمہ درج کرایا، مجھ پر اپنے کالے کرتوتوں کی سیاہی پھینکویا کچھ اور،آپ کو نہیں چھوڑوں گا، مقدمے کے اندراج کیلئے اثرورسوخ استعمال نہیں کیا، انہوں نے کہا کہ مریم نواز کو بتا دیں کہ میں کسی سے ڈرنے والا نہیں، گالی کا جواب گالی سے نہیں دیں گے،آپ کے کارکنوں کو سمجھائیں گے، خاندانی لوگ ہیں،ایسی حرکت کا جواب اس طرح نہیں دیں گے، مجھے عدالت بلائے گی تو ضرور آؤں گا،آپ کی طرح بہانے نہیں بناؤں گا۔دوسری جانب لاہور ہائیکورٹ نے سیاسی اثرو رسوخ استعمال کر کے ترک کمپنی کے افسرطاہر مبین کے خلاف شہباز گل کی طرف سے درج کروائے گئے مقدمہ کے اخراج کی درخواست کی سماعت کیلئے آنے والے وزیر اعظم کے ترجمان شہباز گل پر انڈے اور سیاہی پھینکنے والوں کے خلاف سی سی ٹی وی فوٹیج کی روشنی میں قانونی کارروائی کرنے کا حکم دے دیا۔مسٹرجسٹس ملک شہزاد احمد خان نے طاہر مبین کی اخراج مقدمہ کی درخواست پر سماعت کی،وزیراعظم کے معاون خصوصی شہباز گل کی آمد پر ہنگامہ آرائی کی وجہ سے کمرہ عدالت لاک کروایا گیا، جس پر عدالت نے سیکورٹی انچارج کو طلب کرلیا، سیکورٹی انچارج نے بتایا کہ شہباز گل کو احاطہ عدالت میں دھکم پیل کا سامنا کرنا پڑا، شہبازگل پر انڈے اور سیاہی پھینکی گئی، عدالت نے سارے واقع پر اظہار برہمی کرتے ہوئے حکم دیا کہ سی سی ٹی وی فوٹیج لیکر ذمہ داران کے خلاف فوری کارروائی کی جائے۔عدالت نے شہباز گل کو مخاطب کرتے ہوئے استفسار کیا کہ کیا آپ کا البرکہ کمپنی کے ساتھ کوئی معاہدہ ہے،شہباز گل نے بتایا کہ ان سے کوئی معاہدہ نہیں، عدالت نے شہباز گل سے کہا کہ آپ کو آئندہ سماعت پر عدالت آنے کی ضرورت نہیں ہے، عدالت نے کیس کی مزیدسماعت 30 مارچ تک ملتوی کردی۔

شہباز گل 

مزید :

صفحہ اول -