پی ڈی ایم سربراہی اجلاس ، مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی کے درمیان ایسا اختلاف کہ اپوزیشن اتحاد بکھرنے کا خدشہ پیدا ہو گیا 

پی ڈی ایم سربراہی اجلاس ، مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی کے درمیان ایسا اختلاف کہ ...
پی ڈی ایم سربراہی اجلاس ، مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی کے درمیان ایسا اختلاف کہ اپوزیشن اتحاد بکھرنے کا خدشہ پیدا ہو گیا 

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ(پی ڈی ایم)کے ہنگامہ خیز سربراہی اجلاس میں پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن میں اختلافات کھل کر سامنے آ گئے ہیں ،نواز شریف کی واپسی کے معاملے کے بعد سینیٹ میں اپوزیشن لیڈر کے معاملے پر بھی دونوں بڑی جماعتوں میں اختلاف پیدا ہو گیا ہے ۔

نجی ٹی وی'جیو نیوز' کے مطابق پی ڈی ایم کے سربراہی اجلاس میں اپوزیشن جماعتوں کے درمیان مختلف امور پر مشاورت ہوئی اور اختلافی امور پر کھل کر قائدین نے اظہار خیال کیا ،سینیٹ میں قائدحزب اختلاف کے معاملے پر پیپلز پارٹی نے پی ڈی ایم سے نشست مانگ لی ہے جس پر مسلم لیگ ن نے ایک بار پھر مخالفت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایوان بالا میں قائدحزب اختلاف ن لیگ سےہوگا۔ذرائع کے مطابق پیپلز پارٹی کا کہنا ہے کہ سینیٹ میں اپوزیشن لیڈر ہماری پارٹی کا ہونا چاہئے تاہم ن لیگ نےسینیٹ میں اپوزیشن لیڈرکےمتعلق پیپلزپارٹی کےموقف کی مخالفت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایوان بالا میں قائد حزب اختلاف ن لیگ سے ہو گا ۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ سینیٹ میں اپوزیشن لیڈرکیلئےن لیگ کی جانب  سےسعدیہ عباسی اوراعظم نذیرتارڑکا نام سامنےآگیا ہے جبکہ پیپلز پارٹی سابق وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی کو قائد حزب اختلاف بنانا چاہتی ہے ،اس معاملے پر تاحال اتفاق رائے نہیں ہو سکا ۔دوسری طرف اجلاس میں مولانافضل الرحمان نے مولاناعبدالغفورحیدری کوسات  ووٹ کم پڑنےکا معاملہ بھی اٹھادیا ہے ۔

مزید :

قومی -