دوسری شادی کرنے پر6 ماہ قیداور5لاکھ روپے جرمانہ کی سزا معطل

 دوسری شادی کرنے پر6 ماہ قیداور5لاکھ روپے جرمانہ کی سزا معطل

  

 لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہورہائی کورٹ کی جسٹس عالیہ نیلم نے پہلی بیوی کی اجازت کے بغیر دوسری شادی کرنے پر6 ماہ قیداور5لاکھ روپے جرمانہ کی سزا معطل کرتے ہوئے ملزم غلام حسین کوضمانت پر رہا کرنے کا حکم دے دیا،فاضل جج نے غلام حسین کی اپیل پر مدعاعلیہان کو نوٹس جاری کرتے ہوئے آئندہ تاریخ سماعت پر جواب بھی طلب کرلیا غلام حسین نے مجسٹریٹ کی جانب سے پہلی بیوی کی اجازت کے بغیر دوسری شادی کے کیس میں ملنے والی مذکورہ بالاسزاکوعدالت عالیہ میں چیلنج کررکھا تھا، درخواست گزار کا موقف تھاکہ مجسٹریٹ کے پاس پہلی بیوی کی اجازت کے بغیر دوسری شادی کرنے پر سزا کا اختیار نہیں،عدالت سے استدعاہے کہ پہلی بیوی کی اجازت کے بغیر دوسری شادی پر قید اور جرمانے کی سزا کو کالعدم قرار دیا جائے،عدالت نے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد مذکورہ بالاحکم جاری کردیاغلام کو پہلی بیوی کی اجازت کے بغیر دوسری شادی پر20 اکتوبر 2020 کو مجسٹریٹ نے سزا سنائی تھی،سیشن جج نے بھی22 دسمبر 2021 ء کو غلام حسین کی اپیل خارج کرتے ہوئے مجسٹریٹ کی سزا کوبحال رکھا اس نے سیشن جج کی اپیل خارج کرنے کے فیصلے کیخلاف عدالت عالیہ سے رجوع کررکھا ہے،غلام حسین کو چار فروری 2022 کو لاہور ہائی کورٹ سے گرفتار کیاگیاتھا،فاضل جج نے عبوری حکم کے ذریعے ملزم کی ضمانت منظور کرتے ہوئے مدعا علیہان سے جواب طلب کیاہے۔

سزا معطل

مزید :

صفحہ آخر -