پی ٹی آئی کی سماعت ملتوی کرنیکی استدعا مسترد،کیس کو اور کتنا چلانا ہے؟چیف الیکشن کمشنر

پی ٹی آئی کی سماعت ملتوی کرنیکی استدعا مسترد،کیس کو اور کتنا چلانا ہے؟چیف ...

  

      اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) الیکشن کمیشن نے فارن فنڈنگ کیس میں تحریک انصاف کی التوا کی درخواست مسترد کرتے ہوئے کہا کہ سات سال سے کیس چل رہا ہے اور کتنا چلانا ہے؟ تفصیلات کے مطابق چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں تین رکنی کمیشن نے تحریک انصاف پارٹی فارن فنڈنگ کیس کی سماعت کی، پی ٹی آئی کے معاون وکیل الیکشن کمیشن میں پیش ہوئے جبکہ پی ٹی آئی وکیل انور منصور اور شاہ خاور پیش نہ ہوسکے۔ معاون وکیل نے بتایا کہ انورمنصورکراچی سے اسلام آباد پہنچ گئے مگرشدید بخارہے، جس پر چیف الیکشن کمشنر نے استفسار کیا انوار منصور باہر ملک نہیں گئے تھے؟ انھوں نے گزشتہ سماعت پر کہا تھا وہ بیرون ملک جارہے ہیں۔ پی ٹی آئی کے معاون وکیل نے انورمنصورکی علالت کے باعث ایک ہفتے کے التوا کی استدعا کی، جس پر چیف الیکشن کمشنر سماعت التوا کی پی ٹی آئی کی استدعا مسترد کرتے ہوئے کہا آپ بار بار التوا مانگتے ہیں، 7سال سے کیس زیرسماعت ہے۔ اکبر ایس بابر کے وکیل احمد حسن نے دلائل میں کہا پارٹی فنڈز تفصیلات صرف الیکشن کمیشن کو بتانے کے پابند ہیں، یہ معاملہ پی ٹی آئی اور الیکشن کمیشن کے درمیان ہے۔ وکیل اکبرایس بابر کا کہنا تھا کہ انہوں نے غیرملکی اکاؤنٹس کی تفصیلات کمیٹی کونہیں دیں، پی ٹی آئی چاہتی ہے اکبر ایس بابرکوکیس میں شامل نہ کیا جائے، پی ٹی آئی کی درخواست کومستردکیاجائے۔ چیف الیکشن کمشنر نے کہا آپ پی ٹی آئی کی درخواست پر دلائل دیں، وکیل کا کہنا تھا کہ کمیٹی تصدیق کررہی ہے ممنوعہ فنڈنگ ہوئی، یہ غیرمتعلقہ ہے ایک ارب کی ممنوعہ فنڈنگ آئی یا 10 روپے کی، درخواست پرجواب نہیں دے سکتے جب تک رپورٹ زیرسماعت نہ آئے۔ چیف الیکشن کمشنر نے ریمارکس دیئے کہ درخواست پر فیصلہ الیکشن کمیشن نے کرناہے، مجھے تو لگ رہا ہے کہ آپ التوا کر رہے ہیں۔ الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرتے ہوئے غیرملکی فنڈنگ کیس کی سماعت17مارچ تک ملتوی کردی۔

فارن فنڈنگ کیس 

مزید :

صفحہ اول -