سیرت طیبہ کے ساتھ تعلق مضبوط بنانا ہو گا،ہشام الٰہی ظہیر

سیرت طیبہ کے ساتھ تعلق مضبوط بنانا ہو گا،ہشام الٰہی ظہیر

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور(خصوصی رپورٹر ) جمعیت اہل حدیث پاکستان کےصدر علامہ ہشام الہی ظہیر کی اپیل پر ملک بھر کی اہل حدیث مساجد میں تحفظ ناموس رسالت و عظمت صحابہ کے عنوان پر جمعہ کے خطبات کا انعقاد کیا گیا۔جمعیت اہل حدیث کے علمائے شیوخ، خطباء، واعیظین،مقررین نے اس حوالے سے سیرت طیبہ ناموس رسالت عظمت صحابہ پر روشنی ڈالی۔ مرکز قرآن و سنہ اسلامک سینٹر یوای ٹی میں جمعیت اہل حدیث پاکستان کے صدر علامہ ہشام الہی ظہیر نے کہا قرآن و سنت کی رو سے شاتم رسول کی سزا”سر تن سے جدا“ ہے۔ اسلام کی سربلندی اور عالمی برادری کے تمام مسائل کا حل سیرت طیبہ میں متعین ہیں جتنا ہم بحیثیت مسلمان و قوم رسول اللہ کی سیرت طیبہ کیساتھ اپنا تعلق مضبوط کریں گے ا_±تنا ہی اللہ تعالیٰ کا قرب اور ا_±س کی رحمتوں، برکتوں کا نزول ہم نازل ہو گا اور کفار کو مسلمانوں کی طرف میلی آنکھ سے دیکھنے کی جراٰت و ہمت نہیں ہو گی۔

عالمی برادری بین الاقوامی سطح پر انبیائ_ کرام علیہ اسلام، صحابہ کرام رضوان اللہ علیھم اجماعین اور محمد الرسول اللہ ? کی تو ہین کا قانون پاس کروانے کیلئے اپنا کردار ادا کرتے ہوئے غیرت ایمانی کا ثبوت دے۔جمعیت اہل حدیث پاکستان کا منشور دفاع اسلام، اسلامی شعائر اللہ، عقیدہ ختم نبوت ?، تحفظ ناموس رسالت ?، تحفظ عظمت صھابہ کرام ? و اہل بیت ? کا دفاع ہے جبکہ دستور اس ملک میں اللہ اور رسول اللہ ? کا نظام نافذ کرنا ہے۔عظمت صحابہ ? و اہل بیت ? کا دفاع انکا تحفظ ہما رے ایمان کی اصل اساس ہے۔صحابہ، ا_±مھات المومینین، اہل بیت ? کے دفاع کیلئے تن من دھن سب قربان کر دیں گے۔دفاع صحابہ ? و اہل بیت ہما رے ایمان کا حقیقی جزو اور ہمارے ماتھے کا جھومڑ ہیں۔ دین اسلام میں صحابہ و اہل بیت ? میں سے کسی بھی صحابی کی توہین کی کوئی گنجائش موجود نہیں ہیں۔توہین رسالت ? اور توہین اہل بیت و صحابہ ? کےقانون موجود ہیں جو بھی ان نفوس قدسیہ کی توہین کا ارتکاب کرے اس کوآئین و قانون کے تحت قرار واقعی سزا دی جائے ہم نے یہ ملک قرآن و سنت کے نام پر حاصل کیا پاکستان کا قیام بھی رمضان المبارک کی بابرکت راتوں میں ہوا۔اس میں شعائر اللہ، رسول اللہ ?، صحابہ کرام ? کی توہین کا ضابطہ بھی موجود ہونا چاہئے کیونکہ یہ ہما رے ایمان کا حصہ ہے ان کی توہین کسی صورت برداشت نہیں۔تحفظ ناموس رسالت ?، عقیدہ ختم نبوت ? کےلئے ہمارا تن من دھن قربان ہے۔علامہ ہشام الہی ظہیر نے مزید کہا تمام عالم اسلام کو رمضان المبارک میں فلسطین،کشمیری شہدائ_ کےلئے خصوصی دعاو_¿ں کا انعقاد کرنا چاہئے اسرائیل یہودی،بھارتی ہندو جو فسلطین غزہ کشمیر میں ظلم و بربریت کی داستانیں رقم کررہے ہیں ان کے مظالم کے خلاف پوری ملت اسلامیہ سیسہ پلائی دیوار بن جائے۔ رمضان المبارک میں بھی اسرائیل بھارت کی کشمیر فلسطین میں بربریت میں کمی واقع نہیں ہوئی بلکہ ان کے مظالم میں دن بدن اضافہ ہوتا چلاجارہاہے۔ عالمی برادری کو چپ کا روزہ توڑنا چاہئے اس ضمن میں عالمی سطح پر فلسطین غزہ کشمیر میں ہونے مظالم کے خلاف آواز حق کو بلند کرنا چاہئے۔