حکومت آئی ایم ایف مذاکرات ، NFCمیں صوبوں کا حصہ کم کرنیکا مطالبہ مسترد

حکومت آئی ایم ایف مذاکرات ، NFCمیں صوبوں کا حصہ کم کرنیکا مطالبہ مسترد

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

                                                                         اسلام آباد ( مانیٹرنگ ڈیسک ، نیوز ایجنسیاں ) پاکستان نے نیشنل فنانس کمیشن (این ایف سی) ایوارڈ کے فارمولے میں تبدیلی کا عالمی مالیاتی فنڈ کا مطالبہ مسترد کردیا۔آئی ایم ایف نے این ایف سی ایوارڈ کے تحت صوبوں کے حصے پر نظرثانی کا مطالبہ کیا تھا۔حکومت کا کہنا ہے کہ این ایف سی فارمولے میں تبدیلی کا آئی ایم ایف کا مطالبہ مسترد کردیا گیا، این ایف سی پر خلاف آئین کوئی تجویز منظور نہیں کی جائے گی۔ وفاق کے محصولات بہتر بنانے کیلئے متبادل ذرائع تلاش کیے جائیں گے، این ایف سی پرترامیم کا مطالبہ آئی ایم ایف پہلے بھی کرتا رہا ہے، این ایف سی کے تحت صوبوں کا حصہ کم نہیں ہوسکتا۔ این ایف سی کے اخراجات میں وفاق اور صوبے مل کر نئی حکمت عملی بناسکتے ہیں، وفاق اورصوبوں میں بجلی نقصانات مشترکہ طور پر برداشت کرنے کی حکمت عملی بنائی جاسکتی ہے، سکیورٹی سے متعلق اخراجات پر بھی مشترکہ حکمت عملی بنائی جاسکتی ہے۔حکومتی ذرائع کا کہنا ہے کہ بینظیرانکم سپورٹ پروگرام کے اخراجات پربھی مشترکہ حکمت عملی بنائی جاسکتی ہے۔اس سے قبل جمعہ کو ہونیوالے مذاکراتن میں بین الاقوامی مالیاتی فنڈ(آئی ایم ایف) نے وفاق کے پاس این ایف سی کے تحت فنڈز کو ناکافی قرار دیتے ہوئے نظرثانی کا مطالبہ کردیا۔ پاکستان اور عالمی مالیاتی فنڈ(آئی ایم ایف ) کے درمیان مذاکرات کا دوسرا دور جمعہ کو ہوا۔ مذاکرات کے دوسرے دور کیلئے پی آئی اے اور حکومتی ملکیتی اداروں کی نجکاری پر پلان طلب کرلیا گیا۔ گزشتہ روز پاکستانی ٹیم اور آئی ایم ایف کے درمیان قلیل مدتی قرض پروگرام کے جائزہ مذاکرات کا پہلا سیشن مکمل ہوگیا تھا۔ اسٹینڈ بائے ارینجمنٹ (ایس بی اے ) پر دوسری نظرِ ثانی کے لیے وزارت خزانہ میں ہونے والے اس سیشن میں آئی ایم ایف وفد کی قیادت نیتھن پورٹر نے کی۔ آئی ایم ایف نے پاکستان سے مطالبہ کیا کہ وہ وفاقی اور صوبائی حکومتوں کے درمیان مالی وسائل کی تقسیم میں جاری عدم توازن کو دور کرنے کے لیے قومی مالیاتی کمیشن(این ایف سی) ایوارڈ پر نظر ثانی کرے۔ آئی ایم ایف مشن نے پی آئی اے اور حکومت کے ملکیتی اداروں کی نجکاری کا پلان طلب کرلیا۔ پی آئی اے کی نجکاری کیلئے 12 فیصد شرح سود پر ٹرم شیٹ ایگریمنٹ کا امکان ہے۔ ٹرم شیٹ ایگریمنٹ ہونے پر بینکوں سے این او سی ملے گا۔ ذرائع وزارت توانائی کے مطابق آئی ایم ایف توانائی سیکٹر کی کارکردگی سے مطمئن نہیں، وزارت توانائی حکام گردشی قرض، پاور پرچیز ایگریمنٹ پر مذاکرات کریں گے۔ توانائی شعبے کا گردشی قرضہ کم، ایڈجسٹمنٹس بروقت اور ٹیرف بڑھانے پر بات ہوگی۔ مالیاتی خسارہ کنٹرول کرنے،آئندہ بجٹ کی حکمت عملی پر بھی گفتگو ہوگی، وفد کو ٹیکس وصولی میں کمی کی صورت میں اقدامات پر بریفنگ دی جائے گی۔ سٹیٹ بینک نئے پلاسٹک نوٹ جاری کرنے کے پلان پر بھی بریفنگ دے گا۔

مطالبہ مسترد

مزید :

صفحہ اول -