حریت رہنماﺅں کی حالیہ بھارتی انتخابات کے بائیکاٹ کی مہم

حریت رہنماﺅں کی حالیہ بھارتی انتخابات کے بائیکاٹ کی مہم

سرینگر(کے پی آئی)کشمیر سنٹر فار سوشل اینڈ ڈیولپمنٹ سٹیڈیز نے کہا ہے کہ سنٹر ان الزامات پر عوامی عدالت منعقد کرے گا جن میں کہاگیا تھا کہ مزاحمتی لیڈروں کی حالیہ چناو بائیکاٹ مہم کا مقصد ووٹروں کو ایک مخصوص مین سٹریم پارٹی سے دور رکھنا تھا۔کے سی ایس ڈی ایس نے کہا کہ مزاحمتی لیڈروںپر ایک مین سٹریم پارٹی کو فائدہ پہنچانے کی غرض سے دوسری مین سٹریم پارٹی سے ووٹروں کو دور رکھنے کی غرض سے الیکشن بائیکاٹ کال دینے کے الزامات کو غلط یا صحیح ثابت کرنے کیلئے عوامی عدالت منعقد کرنے کا فیصلہ لیاگیا ہے۔کے سی ایس ڈی ایس کا کہنا ہے کہ مجوزہ عوامی عدالت کا فیصلہ ایک کالم کی اشاعت کے بعد کالم کے بعد لیا گیا جس میں انہوں نے لبریشن فرنٹ سربراہ محمد یاسین ملک پر الزام لگایا تھا کہ ان کی الیکشن بائیکاٹ مہم کی فائنانسنگ حکمران جماعت نیشنل کانفرنس کررہی تھی ۔بیان کے مطابق جاہ کے کالم میں یاسین ملک پر ان اسمبلی حلقوں میں مخصوص طور چناو بائیکاٹ مہم چلانے کا الزام لگایا ہے جو پی ڈی پی کی گڑھ تصور کی جاتی ہیں۔

بیان کے مطابق اس کے بعد13مئی کووادی سے شائع ہونے والے کچھ اخبارات میںمظفر حسین بیگ سے منسوب ایک بیان شائع ہوا جس میں انہوںنے مزاحمتی لیڈروں اور کارکنان پر اسی نوعیت کے الزامات عائد کرتے ہوئے کہا تھا کہ کم شرح رائے دہی کو یقینی بنانے کیلئے بائیکا ٹ مہم چلائی گئی تاکہ نیشنل کانفرنس کو فائدہ مل سکے۔بیان کے مطابق الزام لگانے والے اور وہ لوگ ،جن پرالزام لگایا گیا ہو،کو اپنی پوزیشن واضح کرنے کیلئے سامنے آنا چاہئے تاکہ حقائق سامنے آسکیں اور لوگوں کو سچائی کا پتہ چل سکے۔بیان کے مطابق مجوزہ عوامی عدالت مئی کے تیسرے ہفتہ میںمنعقد ہوگی اور اس مقصد کیلئے متعلقہ فریقین اور غیر جانبدار حکم (فیصلہ کرنے والے) کے ایک پینل کو دعوت نامے ارسال کئے جائیں گے ۔بیان کے مطابق کے سی ایس ڈی ایس کو امید ہے کہ متعلقہ فریقین عوامی مفاد میں عوامی عدالت میں حاضر ہوجائیں گے۔سنٹر کے ایک ممبر شکیل قلندر نے کہا کہ عوام کو حقائق سے آگاہ کرنا سوسائٹی کا فرض منصبی ہے

مزید : عالمی منظر