زلزلوں کے بارے میں سائنسدانوں کی انوکھی تحقیق

زلزلوں کے بارے میں سائنسدانوں کی انوکھی تحقیق
زلزلوں کے بارے میں سائنسدانوں کی انوکھی تحقیق

  

 واشنگٹن (نیوز ڈیسک) زلزلے وہ خوفناک قدرتی آفت ہیں کہ جن کا راز انسان پوری کوشش کے باوجود اب تک نہیں جان سکا۔ زلزلے آنے کی بہت سی مختلف وجوہات بیان کی جاتی ہیں لیکن کیا آپ نے کبھی سوچا کہ زمین سے پانی نکالنے والا آپ کا واٹر پمپ یا کھیتوں کو سیراب کرنے والے ٹیوب ویل بھی زلزلے آنے کا سبب ہوسکتے ہیں۔ امریکی ریاست کیلیفورنیا میں آنے والے زلزلوں پر تحقیق کرنے والے سائنسدانوں نے زمین کے نیچے سے پانی نکالنے کے عمل کو ہی زلزلوں کا ذمہ دار قرار دے دیا ہے۔ ویسٹرن واشنگٹن یونیورسٹی، یونیورسٹی آف اوٹاوا، یونیورسٹی آف یواڈا، رینو اور یوسی برکلے کی یہ مشترکہ تحقیق ”نیچر“ نامی سائنسی جریدے میں چھپی ہے۔ GPS کی مدد سے حاصل ہونے والے ڈیٹا سے سائنسدانوں نے یہ حیرت انگیز بات دریافت کی کہ کیلیفورنیا کی وسطی وادی جہاں کثرت کے ساتھ زیر زمین پانی نکالا جارہا ہے، وہاں کے پہاڑوں کی اونچائی میں دور دراز کے پہاڑوں کی نسبت غیر متوقع اضافہ ہورہا ہے۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ ان پہاڑوں کی اونچائی میں ہر سال ایک سے 3 ملی میٹر کا اضافہ ہورہا ہے یعنی پچھلے ڈیڑھ سو سال میں ان کی بلندی میں تقریباً آدھے فٹ کا اضافہ ہوچکا ہے۔ سائنسدانوں نے یہ نظریہ پیش کیا ہے کہ زمین سے پانی نکالنے سے وہ وزن ختم ہوجاتا ہے جو زمین کو جوڑ کر رکھتا ہے زلزلے والی دراڑیں بننے سے روکتا ہے اور اس طرح زلزلوں میں اضافہ ہوجاتا ہے۔

مزید : تفریح