کراچی میں ٹارگیٹڈ آپریشن کے لئے تمام جماعتوں کو اعتماد میں لیاجائے،ثروت قادری

کراچی میں ٹارگیٹڈ آپریشن کے لئے تمام جماعتوں کو اعتماد میں لیاجائے،ثروت ...

لاہور (سٹاف رپورٹر) سربراہ پاکستان سنی تحریک محمد اعجاز قادری نے کہا ہے کہ کراچی کی اسٹیک ہولڈر جماعتوں کو وزیر اعظم کی میٹنگ میں شامل نہ کرنا غیر سنجیدہ اقدام ہے ،قیام امن کے لئے لازمی ہے کہ تمام جماعتوں کو ٹارگیٹڈ آپریشن کے سلسلے میں اعتماد میں لیا جاتا،سنی تحریک ٹارگٹ کلنگ ،بھتہ خور ی کے خاتمے کےلئے اول روز سے ہی جرائم پیشہ عناصر کے خلاف آپریشن کے حق میں ہے ،کراچی کا امن پورے ملک کی معیشت کو اتحکام بخشے گا،وزیر اعظم کی کراچی میں امن کے حوالے سے میٹنگ میں اہلسنت کو نظر انداز کرنا قبل مذمت عمل ہے بانیان پاکستان کی اولادیں دہشتگردی کا شکار ہیں اور انہیں قیام امن اور دہشتگردی کے خاتمے کےلئے میٹنگ میں نہ بلانادہشتگردوں کو تقویت دینے کے مترادف ہے ،پہلے ہی خود ساختہ فیصلوں کے ذریعے مذاکرت کے نام پر دہشتگردوں کو شیلٹر فراہم کیا جارہا ہے ،جبکہ پوری قوم دہشتگردوں سے آئینی ہاتھوں نمٹنے کا مطالبہ کررہی ہے،ان خیالات کا اظہار انہوں نے سنی تحریک سمیت اہلسنت کی دیگر جماعتوں کو وزیر اعظم کی امن وامان کی میٹنگ میں مدعو نہ کرنے پر شدید مذمت کرتے ہوئے کیا ،ثروت اعجاز قادری نے کہا کہ ملک کے دفاع اور امن وامان کی جدوجہد سے کسی صور ت پیچھے نہیں ہٹیں گے ،انہوں نے کہا کہ ملک کو دہشتگردی اور بدامنی سے پاک کرنا ہے تو تمام مذہبی و سیاسی اکائیوں کو اعتماد میں لیکر فیصلے کرنے ہونگے،انہوں نے کہا کہ کراچی بارود کے ڈھیر پر کھڑا ہے طالبان مذہبی و لسانی قتل وغارتگری کے ذریعے حالات تباہ کرنا چاہتے ہیں ہمارے کارکن اور علماءکرام کو دہشتگردی کا نشانہ بنایا جارہا ہے اور حکومت صرف مفروضوں پر کام کررہی ہے ،اہلسنت ملک کی اکثریت اور محب وطن ہیں انہیں نظر انداز کرناقابل مذمت عمل ہے

مزید : میٹروپولیٹن 1