نئے حاضری سسٹم کے باعث ویسٹ مینجمنٹ سسٹم کے ملازمین سڑکوں پر نکلے

نئے حاضری سسٹم کے باعث ویسٹ مینجمنٹ سسٹم کے ملازمین سڑکوں پر نکلے

لاہور(جنرل رپورٹر) لاہور ویسٹ مینجمنٹ کے ملازمین کی ہڑتال اور دھرنے کے اصل متحرکات سامنے آ گئے ہیں ہڑتال کمپنی کے ان داروغوں نے کرائی جن کا حاضری نظام کی تبدیلی سے ملازمین سے ماہانہ بند ہو گیا تھا قبل ازیں لاہور کی 150یونین کونسلوں میں خاکروبوں کی حاضری داروغے لگاتے تھے جنہوں نے ماہانہ طے کے لئے ہر یونین کونسل سے درجنوں ملازمین کو ڈیوٹی سے مستثنیٰ قرار دیا ہوا تھا ایم ڈی نے حاضری کے لئے موبائل کیمرے سے تصویر بنانے کا سسٹم سامنے لایا جس کے بعد صبح 6بجے اور دوپہر 2بجے موبائل کیمرے پر تصویر بنا کر حاضری لی جس سے داروغہ اور سینٹری انسپکٹر کی ماہانہ کمائی بندہوگئی اور وہ یونینوں سے مل کر ملازمین کو سڑکوں پر لے آئے۔ سپیشل برانچ نے ہڑتال کے بارے حکومت کو رپورٹ پیش کر دی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ ہڑتال نیا حاضری سسٹم سامنے آ جانے سے جن لوگوں کی کمائی بند ہوئی انہوں نے ہڑتال کرا دی۔ اس حوالے سے کمپنی کے منیجنگ ڈائریکٹر ڈاکٹر وسیم اجمل چوھدری سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ حاضری کا نیا نظام کام چوری کی بندش کا باعث بنا لئے اس کو تبدیل نہیں کرینگے۔ایم ڈی نے کہا کہ لیٹ آنے والے ورکروں کو 15منٹ کی بجائے 30منٹ کی رعایت دیں گے۔

۔

۔

 انہوں نے کہا کہ یہ وہی لوگ ہیں جن کی کام چوری حاضری کا نظام ان لائن ہو جانے سے بند ہو گئی اور یہ لوگ شور مچا رہے ہیں ہزاروں ملازمین کوملازمت ریگولر کر دی گئی بقایا ملازمین کیس ضلعی حکومت کو بھیج دیاہے ملازمین بھتہ خوروں کی باتوں میں نہ آئیں۔دریں اثناءملازمین نے گزشتہ روز بھی اپنے مطالبات کے حق میں ایجرٹن روڈ پر مظاہرہ کیا دھرنا دیا اور سینہ کوبی کی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1