حکومت نے عمران خان کی تحریک کا توڑ کرنے کے لیے انتخابی اصلاحات کا بل لانے کا فیصلہ کر لیا

حکومت نے عمران خان کی تحریک کا توڑ کرنے کے لیے انتخابی اصلاحات کا بل لانے کا ...

                                    لاہور(شہزاد ملک) حکومت نے پاکستان تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان کی جانب سے انتخابی اصلاحات کو بنیاد بنا کر حکومت کے خلاف چلائی جانے والی احتجاجی تحریک کا توڑ کرنے اور اس کو کمزور کرنے کے لئے اسمبلی میں الیکشن کمیشن میں انتخابی اصلاحات کرنے کا بل لانے کا فیصلہ کر لیا ہے حکومت کی جانب سے ےہ بل قومی اسمبلی کے رواں اجلاس میں ہی پیش کئے جانے کا امکان ہے تاکہ تحریک انصاف کے 25مئی کو فیصل آباد میں ہونے وا لے احتجاجی جلسے سے قبل ہی اس بل کو اےوان سے منظور کر والیا جائے ۔واضح رہے کہ الیکشن کمیشن میں نئی انتخابی اصلاحات اسمبلی کے ایک بل کے زریعے سے ہی عمل میں لائی جا سکتی ہے اس سے پہلے بھی آٹھارویں آئینی ترمیم کے زریعے سے الیکشن کمیشن کے قیام کے بارے میں چیف الیکشن کمیشن کا تقرر وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر کی مشاورت سے عمل میں لانے کی ترمیم کی گئی تھی ۔حکومت کے ذرائع نے ” پاکستان “ کو بتاےا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان کی جانب سے الیکشن کمیشن میں انتخابی اصلاحات لانے کے مطالبے پر حکومت کو کوئی اعتراض نہیں ہے اور حکومت خود ےہ چاہتی ہے کہ الیکشن کمیشن میں انتخابی اصلا حات کی جائیں اس سلسلے میں حکومت نے پیپلز پارٹی کے ساتھ بھی مشاورت مکمل کر لی ہے اور وہ بھی انتخابی اصلاحات کے حق میں ہے پیپلز پارٹی نے حکومت کو ےہ ےقین بھی دلواےا ہے کہ وہ اس بل کی مخالفت نہیں کرے گی بلکہ اپنی مثبت تجاویز اس بل میں دے گی ۔ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ اگر آئندہ چند روز میں انتخابی اصلاحات لانے کا ےہ بل اےوان میں پیش کر دیتی ہے تو پھر اس طرح سے اسمبلی میں تحریک انصاف دفاعی پوزیشن پر آ جائے گی اور اگر اس بل کی کاروائی کے دوران تحریک انصاف اس کی مخالفت ےا اس کی کاروائی کا بائیکاٹ کرتی ہے تو اس سے حکومت کی پوزیشن بہتر ہو جائے گی

بل لانیکا فیصلہ

مزید : صفحہ اول