مہلک وائرس بھی عربوں کی اونٹوں سے محبت کم نہ کر سکا

مہلک وائرس بھی عربوں کی اونٹوں سے محبت کم نہ کر سکا
مہلک وائرس بھی عربوں کی اونٹوں سے محبت کم نہ کر سکا

  

ریاض (نیوز ڈیسک) عربوں کی اونٹوں سے محبت تاریخی طورپر مشہور ہے اور اس محبت کی شدت کا یہ عالم ہے کہ سینکڑوں عربوں کو ہلاک کرنے والا مہلک مرس وائرس بھی اس میں کمی نہیں کرسکا۔ سعودی حکومت کی بار بار وارننگ کے باوجود عرب کسانوں اور دیہاتیوں نے اونٹوں سے دوری اختیار کرنے سے انکار کردیا ہے۔ حکومت نے عوام کو انتباہ کیا تھا کہ چونکہ جان لیوا وائرس مرس کے پھیلنے کی وجہ اونٹ بن رہے ہیں اس لئے ماسک اور دستانے پہنے بغیر اونٹوں کے قریب نہ جائیں، اونٹ کا گوشت کھانے اور دودھ پینے سے اجتناب کریں اور بیمار اونٹوں سے حد درجہ محتاط رہیں۔ اس وارننگ کے جواب میں عربوں نے اونٹوں سے بھرپور محبت کے اظہار کیلئے ان کے ساتھ بوس و کنار کی تصویریں اور ویڈیو بنانا شروع کردی ہیں۔ ایک ویڈیو میں ایک عربی شخص اپنے دو اونٹوں کے درمیان کھڑا ہے اور ان میں سے ایک کو چھینکنے کی دعوت دے رہا ہے اس کا کہنا ہے کہ اس کی اونٹنی کہتی ہے کہ اس میںمرس وائرس نہیں ہے۔ سعودی عرب مرس وائرس سے شدید متاثر ہوا ہے اور اس کی وجہ سے ابتک 133ہلاکتیں ہوچکی ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس