نئے بجٹ پرکاروباری برادری کوتحفظات ہیں ‘ صدر راولپنڈی چیمبر

نئے بجٹ پرکاروباری برادری کوتحفظات ہیں ‘ صدر راولپنڈی چیمبر

راولپنڈی ( کامرس ڈیسک )راولپنڈی چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے صدر سید اسد مشہدی نے کہا ہے کہ ملک کی کاروباری برادری میں وفاقی بجٹ برائے سال 2015-16کے بارے میں تحفظات پائے جاتے ہیں کہ آنے والا بجٹ کاروبار اور کاروباری سر گرمیوں پر منفی اثرات مرتب کرے گا، حکومت کی طرف سے کاروباری برادری کو ابھی تک اعتماد میں نہیں لیا گیا اور نہ تجاویز طلب کی گئی ہیں جس سے خدشات میں اضافہ ہوا ہے ،حکومت سے مطالبہ ہے کہ کاروباری برادری کو فی الفور اعتماد میں لیا جائے اور بجٹ کوکاروبار دوست ہونا چاہیے تاکہ سر مایہ کاروں کا اعتماد بحال کیا جا سکے ،ان خیالات کا اظہار انہوں نے چیمبر میں تاجروں و صنعتکاروں کے ایک وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کیا،اس موقع پر سینئر نائب صدر میاں ہمایوں پرویز ، نائب صدر صبور ملک ،ارکان مجلس عاملہ اور دیگر ممبران بھی موجود تھے۔اسد مشہدی نے کہا کہ حکومت بجٹ سازی میں اسٹیک ہولڈرز کو شامل نہیں کر رہی جس سے حکومت کو مطلوبہ ثمرات حاصل کرنے میں دشواری ہو گی ، ملک جن حالات کا شکار ہے حکومت کا ٹاپ ایجنڈا اقتصادی و معاشی ترقی ہونا چاہیے اور یہ اُس وقت ہو گا جب حکومت کاروباری برادری کو اعتماد میں لے کر فیصلہ کرے گی۔

اور انہیں فیصلہ سازی میں شامل کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ ماضی میں حکومتی پالیسیوں اور اسٹیک ہولڈرز کو اعتماد میں نہ لینے سے کئی مقامی سر مایہ کار اپنی صنعتیں دیگر ممالک میں شفٹ کر چکے ہیں ،حکومت کو ماضی سے سبق سیکھنا چاہیے ۔صدر آر سی سی آئی نے کہا کہ غیر ملکی سرمایہ کار ی ملک میں نہ ہونے کے برابر ہے۔

،حکومت کی سخت پالیسیوں اور ٹیکسوں کی بھر مار میں مقامی سرمایہ کار دوسرے ممالک کا رخ کر رہے ہیں،حکومت کو چاہیے کہ ملک کی کاروباری برادری کو پالیسی سازی کے عمل میں شامل کرے تا کہ جن لوگوں کیلئے پالیسی بنائی جا رہی ہے انہیں آن بورڈ لے کر زیادہ سے زیادہ فوائد حاصل کئے جا سکیں اور کاروبار ترقی کریں اور معاشی صورتحال بہتر ہو۔

مزید : کامرس


loading...