سرکاری اراضی ہتھیانے کی کوشش اسسٹنٹ دائریکٹر لینڈ ریکارڈ سمیت 3 افراد پر مقدمہ

سرکاری اراضی ہتھیانے کی کوشش اسسٹنٹ دائریکٹر لینڈ ریکارڈ سمیت 3 افراد پر ...

 لاہور(عامر بٹ سے)بحریہ ٹاؤن بلاول ہاؤس کے بالمقابل صوبائی دارالحکومت کی89کنا ل 10مرلہ اربوں روپے مالیت کی بیش قیمت سرکاری اراضی کی جعلی رجسٹری ریکارڈ میں چسپاں کر دی گئی جبکہ محکمہ اینٹی کرپشن کے ڈائریکٹر جنرل پنجاب انور رشید کی مداخلت کے باعث صوبائی رقبے کی منتقلی اور جعلسازی کی کوشش ناکام بنا دی گئی جبکہ ڈی سی او لاہور کی مدعیت میں اسسٹنٹ ڈائریکٹر لینڈ ریکارڈ اور سروس سنٹر آفیشل سمیت لینڈ مافیاکے تین افراد پر مقدمہ درج کر لیاگیا،سروس سنٹر انچارج کی گرفتاری کے بعد محکمہ اینٹی کرپشن نے دیگر ملزمان کے گرد گھیرا تنگ کر دیا مزید معلوم ہواہے گزشتہ دنوں تحصیل رائے ونڈ کے موضع رکھ سلطان کے میں صوبائی حکومت کی ملکتی 89کنال 10مرلہ اراضی ہتھیانے کی پلاننگ بھی کی گئی اور داتا گنج بخش ٹاؤن کی مصدقہ نقول برانچ میں تعینات اہلکاروں سے گٹھ جوڑ کرتے ہوئے ریکارڈ میں جعلی رجسٹری چسپاں کر دی گئی بعد ازاں سب رجسٹرار آفس سے اسے پرچہ رجسٹری میں تبدیل ہوئے باقاعدہ کمپوٹر سروس سنٹر میں انتقال کے اندراج کیلئے جمع کروا دی گئی 30سال قبل سابق ڈپٹی کمشنر جاوید محمود کی جانب سے جعلی الاٹمنٹ لیٹر کی بنیاد پر جعلی رجسٹری تیار کی گئی جس کی باضابطہ کسی اعلیٰ افسران سے کوئی اجازت نہ لی گئی،جس کے باعث اسسٹنٹ ڈائریکٹر لینڈریکارڈ وقاص وٹو اور سروس سنٹر آفیشل نے انتقال کی تصدیق کر دی اطلاع ملنے پر اسسٹنٹ کمشنر رائے ونڈ علی شہزاد نے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ کلکٹر ریونیو عرفان نوازمیمن اور ڈی سی او لاہور کیپٹن (ر)محمد عثمان کو اعتماد میں لے کر آگاہ کیا جس پر ڈی سی او لاہور نے اس معاملے کی تحقیقات کیں اور الزامات ثابت ہونے کی بناء پر اینٹی کرپشن حکام کو سرکاری ملازمین اور پرائیویٹ مفاد کنندگان کے خلاف کاروائی کرنے کی سفارش کی ڈی سی او لاہور کی مدعیت میں محکمہ اینٹی کرپشن نے مقدمہ نمبر 64/15درج کر لیا ہے

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...