سنی لیون کیخلاف خاتون کی درخواست پر مقدمہ درج

سنی لیون کیخلاف خاتون کی درخواست پر مقدمہ درج
سنی لیون کیخلاف خاتون کی درخواست پر مقدمہ درج

  


نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بالی ووڈ اداکارہ سنی لیون کے خلاف سوشل میڈیا میں فحاشی پھیلانے کے الزام میں مقدمہ درج کروا دیاگیا۔ اداکارہ ان دنوں اپنی فلم کی پرموشن کے سلسلے میں مہاراشٹر کے مختلف شہروں کے دورے کر رہی ہیں، وہ جس شہر میں بھی جاتی ہیں انتہاءپسند ہندو ان کے خلاف فحاشی پھیلانے کا مقدمہ درج کروا دیتے ہیں، اب تک ان کے خلاف مختلف تھانوں میں متعدد درخواستیں دی جا چکی ہیں۔ نئی ایف آئی آر 30سالہ خاتون انجلی پالن نے دام بیویلی تھانے میں درج کروائی۔

مزیدپڑھیں:ایشیاء کے دو بڑے فنکار اب ایک فلم میں

انجلی نے الزام لگایا کہ انٹرنیٹ استعمال کرتے ہوئے اس نے سنی لیون کی متعدد فحش پوسٹس دیکھیں، اداکارہ کی ویب سائٹ بھی فحش مواد سے بھری ہوئی ہے، جو عوام، خصوصاً بچوں کے مستقبل کے لیے کسی زہر سے کم نہیں۔دام بیویلی پولیس نے مزید تحقیقات کے لیے کیس سائبر کرائم سیل کو ریفر کر دیا ہے۔یاد رہے کہ انتہاءپسند ہندوﺅں کے ایک گروہ ”ہندو جناجگروتی سمتی“ کی طرف سے مسلسل مطالبہ کیا جا رہا ہے کہ فحاشی پھیلانے پراداکارہ سنی لیون کوملک بدر کیا جائے۔گروہ کے ایک رکن اُدے دھوری نے اس حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ہم اداکارہ کے خلاف کئی درخواستیں دے چکے ہیں لیکن پولیس کوئی کارروائی نہیں کر رہی، پچھلے ہفتے ہم نے نوی ممبئی پولیس کو ایف آئی آر درج کروائی۔اُدے دھوری نے کہا کہ ہماری درخواست پر عملدرآمد کروانے کی بجائے پولیس کمشنر کے ایل پرساد نے کہا کہ وہ اپنی فحش تصویریں سوشل میڈیا پر پوسٹ کر رہی ہے، کسی اور کی نہیں، آپ جائیں اورکسی اور کام پر دھیان دیں۔

مزید : تفریح


loading...