سانحہ صفورا چورنگی، بس کلینر نے آنکھوں دیکھا حال بیان کر دیا

سانحہ صفورا چورنگی، بس کلینر نے آنکھوں دیکھا حال بیان کر دیا
سانحہ صفورا چورنگی، بس کلینر نے آنکھوں دیکھا حال بیان کر دیا

  


کراچی (ساریہ نیوز) پولیس نے صفورہ گوٹھ میں دہشت گردی کا نشانہ بننے والے کلینر کا بیان ریکارڈ کرلیا ہے جس کے بعد واقعے کے وقت بس میں سوار عورتیں اور بچے منتیں کرتے رہے لیکن دہشت گردوں کو رحم نہ آیا۔

بیان میں بس کلینر کا کہنا تھاکہ عورتیں اوربچے چلاتے رہے کہ ” ہمیں مت مارو، ہمیں مت مارو“، لیکن دہشت گردوں کو رحم نہ آیا اور تمام مسافروں کو سر نیچے کرنے کا حکم دے کر فائرنگ شروع کر دی۔ کلینر نے انکشاف کیا کہ فائرنگ کے بعد بس مقتل بن گئی اور لوگ رحم کی اپیلیں کرتے رہے لیکن دہشت گردوں نے ایک نہ سنی۔ کلینر کا کہنا تھا کہ ”جب فائرنگ شروع ہوئی تو میں بس کے فرش کے ساتھ چپک کر لیٹ گیا اور ہر طرف چیخ و پکار شروع ہو گئی“۔

کلینر کے مطابق اسماعیلی برادری کی بس میں تمام کارروائی پانچ سے سات منٹ میں مکمل ہوئی اور دہشت گرد باآسانی فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے۔ واضح رہے کہ کراچی کے علاقے صفورہ گوٹھ میں دہشت گردوں نے اسماعیلی بس پر فائرنگ کردی تھی جس کے نتیجے میں 47 افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔

مزید : کراچی /اہم خبریں


loading...