تارکین وطن کے بچوں کو آزاد اقامہ دینے کی خبریں غلط ہیں: وزارت محنت

تارکین وطن کے بچوں کو آزاد اقامہ دینے کی خبریں غلط ہیں: وزارت محنت
تارکین وطن کے بچوں کو آزاد اقامہ دینے کی خبریں غلط ہیں: وزارت محنت

  


جدہ (محمد اکرم اسد / بیورو چیف) سعودی وزارت محنت نے واضح کیا ہے کہ تارکین کی اولاد کے لئے آزاد اقاموں کے دعوے افواہ ہیں، اقامہ قوانین کا اجراءوزارت محنت کے دائرہ اختیار میں نہیں آتا یہ وزارت داخلہ کا کام ہے۔

وزارت محنت کے ترجمان تیسیر المفرج نے واضح کیا کہ سعودی عرب میں پیدا ہونیوالی تارکین وطن کی اولاد کو آزاد اقامہ دینے یا انہیں سعودائزیشن کے نطاق میں داخل کرنے والے دعوے سراسر غلط ہیں۔ وہ ان افواہوں پر تبصرہ کررہے تھے جن میں کہا جارہا ہے کہ بہت جلد ایک قانون جاری ہونیوالا ہے جس کے بموجب مملکت میں جنم لینے والی تارکین وطن کی اولاد کے ساتھ خصوصی معاملہ کیا جائے گا۔

وہ غیر ملکی اولاد جو یہاں پیدا ہوئی ہو اور مملکت سے باہر نہ گئی ہو اسے اجیر یا میزبان کے بغیر آزاد اقامہ دئیے جائیں گے اور سعودائزیشن کی شرح میں انہیں ہم وطنوں کی طرح شامل کیا جائے گا۔ المفرج نے کہا کہ مملکت میں اقامہ کے قوانین و ضوابط مقرر ہیں ان کا تعلق وزارت محنت سے نہیں بلکہ وزارت داخلہ سے ہے۔ ہماری وزارت اس حوالے سے کوئی قانون سازی نہیں کرتی جو قاعدے ضوابطے مقرر ہوتے ہیں انہیں نافذ کرتی ہے۔

مزید : بین الاقوامی


loading...