کور کمانڈر کا دورہ طورخم، مسائل سنے، جائیزہ لیا، احکام صادر

کور کمانڈر کا دورہ طورخم، مسائل سنے، جائیزہ لیا، احکام صادر

پاک افغان بارڈر طورخم سے ہزاروں قبائلی عوام کا روزگا ر وابستہ ہے مقامی قبائلی عوام تجارت اور مزدوری کی غرض سے دونوں طرف آزادانہ آتے جا تے اور اپنے بچوں کیلئے حلال روزی کما رہے تھے لیکن بارڈر منجمنٹ پالیسی اور پاسپورٹ ویزہ لاگو ہونے کے بعد طورخم میں روزگار بھی شدید متاثر ہو گیا قبائلی عوام شدید احتجاج کر رہے تھے اور مطالبہ کر رہے تھے کہ بارڈر منجمنٹ پالیسی سر آنکھوں پر لیکن روز گار کے مواقع ختم نہ کریں اور مقامی قبائلی عوام اور تاجروں کو پاسپورٹ ویزہ سے مستثنیٰ قرار دیا جائے اور انکے کیلئے گیٹ پاس ایشو کریں تاکہ روزانہ آنے جانے میں آسانی ہو طورخم بارڈر منجمنٹ پالیسی اور طورخم میں این ایل سی آنے کے بعد وہاں کے مارکیٹیں ہوٹلز بند ہو گئے تھے کیونکہ ہوٹلز اور مارکیٹوں کیلئے جانے والے راستے بند کر دئے گئے جسکی وجہ سے ہزاروں لوگ بے ورزگا ر ہو گئے گز شتہ رو ز نئے تعینات ہونے والے پولیٹیکل ایجنٹ اسلام زیب کور کمانڈر پشاور کے دورے طورخم کیلئے انتظامات کا جائزہ لے رہے تھے تو مقامی مشران اور تاجروں سمیت کسٹم کلئیر نس ایجنٹس نے پولیٹیکل ایجنٹ کو تمام صورت حال اور بے روزگاری بڑھنے سے آگا ہ کیا انہوں نے مقامی مشران اور تاجروں سے وعدہ کیا کہ روزگار کے حوالے سے دورے کے دوران کور کمانڈر پشاور کو آگاہ کرینگے گزشتہ ہفتے کور کمانڈر نذیر بٹ آئی جی ایف سی محمد وسیم اشرف سیکٹر کمانڈر ارشداور پولیٹیکل ایجنٹ اسلام زیب اسسٹنٹ پولیٹیکل نیاز محمدنے طورخم بارڈر کا دورہ کیا بارڈر پر افغان عسکری قیادت سے بھی ملے اور دونوں ملکوں کی عسکری قیادت نے ایک دوسرے کوجذبہ خیر سگالی کے تحت پھولوں کے گلدستے اور مٹھائیاں بھی پیش کیں بعد ازاں انہوں طورخم میں ا فغانستان سے آنے والے مسافروں کیلئے سہولیات کا جائزہ لیا کو رکمانڈر نذیر بٹ دورے کے بعد پولیٹیکل ایجنٹ اسلام زیب نے میڈیا اور قومی مشران کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ کہ طورخم میں تجارت کومزید فروغ دینے کیلئے کوشش کرینگے علاقے میں امن اومان سے بھر پور فائدہ اٹھائیں گے اور تجارت بڑھانے کیلئے کردار ادا کرینگے پی اے خیبر اسلام زیب نے کہا کہ طورخم اور لنڈی کوتل بازاروں کی رونقیں دوبارہ بحال کرنے کے لئے سب کو اپنے حصے کا کردار ادا کرنا ہوگا اور انتظامیہ اس میں بھر پور تعاؤن کریگی پولیٹیکل انتظامیہ ذرائع کے مطابق کہ جر گہ کو اہم فیصلوں سے آگاہ کیا کہ افغانستان سے دنبے درآمد کرنے پر عائد ٹیکس کو کم کرد یا جائیگا تاکہ کسی کو کوئی پریشانی نہ ہو اورفی دنبے کے حساب سے کم اور معقول ٹیکس عائد کیا جائے گا اور طورخم میں مقامی مزدوروں کیلئے روزگار کے مواقع پیدا کئے جائیں گے جبکہ طورخم کسٹم امور میں کوئی مداخلت نہیں کرسکے گا بلکہ کسی گاڑی کو کسٹم سے کلیئرنس کے بعد کوئی نہیں روک سکے گا کلیئر نس اور کاغذات چیک کرنے کا اختیار صرف کسٹم حکام کے پاس رہیگا آئی جی ایف سی میجر جنرل وسیم اشرف نے جرگے کو آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ علاقے میں سرچ آپریشن اور چھاپوں سے پہلے قومی مشران اور پولیٹیکل انتظامیہ کو اعتماد میں لیا جائے گا اور چھاپوں کے دوران گر فتا ر افراد کو ایک گھنٹے کے اندر تحقیقات مکمل کرکے بے گناہ افراد کو پولیٹیکل انتظامیہ کے حوالے کیا جائے گا انہوں نے قومی مشران کو طورخم میں این ایل سی ٹرمینل پر جاری ترقیاتی کاموں کے حوالے سے بھی آگاہ کیا اور کہا کہ اس سے روزگار اور کاروبار میں اضافہ ہوگا اور کہا کہ طورخم پشاور شاہراہ پر غیر ضروری چیک پوسٹیں ختم کر دی گئی ہیں قومی مشران اور کسٹم کلیئر نس ایجنٹس نے ان اقدامات کو خوش آئند قرار دیا اور کہا کہ مجوزہ اقدامات اور سفارشات روز گا رمیں اضافے کیلئے بہتر ثابت ہو نگے قومی مشران نے آئی جی ایف سی میجر جنرل وسیم اشرف اور پولیٹیکل ایجنٹ خیبر کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ قبائلی علاقوں میں مسائل اور ایشوز قبائلی جرگوں کے ذریعے بہتر طور پر حل ہو سکتے ہیں۔

مزید : ایڈیشن 1

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...