نیب نے نواز شریف کی 20مئی کو طلبی کا نوٹس جاتی امرا میں وصول کرادیا

نیب نے نواز شریف کی 20مئی کو طلبی کا نوٹس جاتی امرا میں وصول کرادیا

لاہو(مانیٹرنگ ڈیسک) نیب کی ٹیم نے سابق وزیراعظم میاں نوازشریف کی 20 مئی کو طلبی کا نوٹس ان کی رہائش گاہ جاتی امرا میں وصول کرادیا۔تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ(ن) کے قائد پر الزام عائد کیا گیا ہے کہ انہوں نے 1998 ء میں بطور وزیراعظم اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے رائے ونڈ سے جاتی امرا تک غیر قانونی سڑک تعمیر کرائی۔نیب نوٹس کے مطابق میاں نوازشریف نے سڑک کی چوڑائی 20 سے 24 فٹ کرائی، ان کی وجہ سے ضلع کونسل کے بہت سے عوامی منصوبے بند کرنا پڑے۔نیب کی ٹیم نوازشریف کی طلبی کا نوٹس وصول کرانے جاتی امرا پہنچی جہاں ٹیم کو اندر جانے کی اجازت نہیں دی گئی اورنیب ٹیم نے گیٹ پر ہی سکیورٹی سٹاف کو نوٹس موصول کرایا۔ذرائع کے مطابق ہ چیئرمین نیب نے نوازشریف کے کیس کی تحقیقات کیلئے خصوصی ٹیم تشکیل دے دی ہے جس میں2 ڈپٹی ڈائریکٹر اور ایک اسسٹنٹ ڈائریکٹر شامل ہے۔

لاہور(خبرنگار)نیب لاہور نے پنجاب میں عبوری حکومت کے قیام کے فوری بعد شریف فیملی کے خلاف انکوائریوں کو تیزی سے نمٹانے کا فیصلہ کرلیا ۔نیب لاہور نے 18مئی کو حمزہ شہباز شریف کو صاف پانی کرپشن کیس ،20مئی کو نوازشریف کو رائیونڈ روڈ کرپشن کیس ،22مئی کو علی عمران کو صاف پانی کرپشن کیس اور 4جون کو شہباز شریف کو صاف پانی کرپشن کیس میں طلب کر رکھا ہے ۔ذرائع کے مطابق 31مئی کے بعد نگران حکومت کے قیام کے فوری بعد شریف فیملی کے خلاف نئی انکوائریوں کو تیزی سے نمٹا کر ریفرنسز دائر کرنے کے لئے نیب کی ٹیموں کو ہدایات جاری کردی گئیں۔ ذرائع کے مطابق نیب کا علی عمران اور حمزہ شہباز شریف کے گرد تحقیقات کا گھیرا تنگ ہونے سے شریف فیملی کی مشکلات بڑھ جائیں گی۔

مزید : صفحہ اول