جامعہ اشرافیہ کے شیخ الحدیث مولانا صوفی محمد سرور 85سال کی عمر میں انتقال کر گئے، قبرستان شیر شاہ میں سپرد خاک

جامعہ اشرافیہ کے شیخ الحدیث مولانا صوفی محمد سرور 85سال کی عمر میں انتقال کر ...

لاہور ( پ ر ) جامعہ اشرفیہ لاہور کے شیخ الحدیث ، نامور عالم دین حضرت مولانا صوفی محمد سرور ؒ مختصرعلالت کے بعد 85سال کی عمر میں لاہور میں انتقال کرگئے، انہوں نے 60سال تک حدیث اور دیگردینی کتب پڑھائیں تمام زندگی دین کی اشاعت، درس و تدریس ، لوگوں کی اصلاح نفس اور تزکیہ وتربیت میں گزاری ،وہ کئی کتابوں کے مصنف ،زہدوتقویٰ اور علم عمل کے پیکر تھے۔مرحوم نے تین بیٹے صاحبزادہ مولاناصوفی عتیق الرحمن،مولانا شفیق الرحمن،مولاناعبدالرحمن،تین بیٹیاں اور اہلیہ سمیت ہزاروں شاگرداور لاکھوں عقیدت مند سوگوار چھوڑے ہیں۔ مولانا صوفی محمد سرور ؒ نے میڑک کے بعد بانی جامعہ اشرفیہ حضرت مولانا مفتی محمد حسن ؒ کے پاس دینی تعلیم کا آغاز کیا اور پھر جامعہ خیر المدارس ملتان میں دینی کتب کی تعلیم حاصل کی، پھرجامعہ اشرفیہ لاہورمیں دورہ حدیث میں داخلہ لیا اورکامیاب ہوکر سند فراغت حاصل کی جس کے بعد آپ ؒ نے کراچی میں مفتی اعظم پاکستان مفتی محمد شفیع ؒ کے پاس کچھ عرصہ تخصص میں بھی تعلیم حاصل کی ،تعلیم سے فراغت کے بعد تین سال جامعہ خیرالمدارس ملتان اور دس سال دارلعلوم عیدہ گاہ کبیر والامیں حدیث اوردیگر علوم فنون کی کتب پڑھانے کے بعد جامعہ اشرفیہ لاہور کے سابق مہتمم حضرت محمد عبیداللہ قاسمی ؒ کے اصرار پر جامعہ اشرفیہ میں بطور استاد تشریف لائے اور حد یث کی مشہور کتاب’’ ابوداؤد‘‘ پھر بخاری شریف کا آغاز کیا جبکہ وفات تک روزانہ بعد نماز عصر مولانا اشرف علی تھانوی ؒ کے ملفوظات کے درس کا سلسلہ بھی جاری رکھا ۔جامعہ اشرفیہ کے مہتمم مولانا حافظ فضل الرحیم اشرفی، نائب مہتمم مولانا قاری ارشد عبید ، پروفیسر مولانامحمد یوسف خان،مولانا محمد اکرم کشمیری ،مولانا عبدالرحیم چترالی ،حافظ اسعد عبید ،حافظ اجود عبید،مولانا زبیر حسن، پروفیسرڈاکٹر مولانا سعد صدیقی،مولانا فیاض الدین چترالی، مفتی احمد علی ،مفتی شاہد عبید،مفتی محمد زکریا،مولانا احمد عمر،مولانا ڈاکٹر زاہد علی ملک،مولانا مجیب الرحمن انقلابی سمیت اکثر اساتذہ اور دیگر نامورعلماء آپ کے شاگرد ہیں، پاکستان سمیت پوری دنیامیں آپ ؒ کے ہزاروں شاگرد دین کے خدمت اوراشاعت دین میں مصروف عمل ہیں۔ نماز جنازہ جامعہ اشرفیہ لاہور میں ان کے بیٹے مولانا صوفی عتیق الرحمن نے پڑھائی جس میں جامعہ اشرفیہ لاہور کے اساتدہ اور طلباء سمیت ملک بھر سے علماء کرام دینی شخصیات مولانا عبد القدوس ترمذی ،مولانا عبدالرؤف ملک ،مولانا قاری احمد میاں تھانوی ،مولانا محمد امجد خان ،مولانا ڈاکٹر خلیل الرحمن تھانوی،مولانا ڈاکٹر سرفراز اعوان،مولانا محمد الیاس چنیوٹی ایم پی اے ،مولانا حکیم شاہ مظہر( کراچی )،مولانا عبدالرؤف فاروقی ،مولانا اسد اللہ فاروق ،مولانا عقیق الرحمن ، مولاناظفر احمد قاسم (وہاڑی)عثمان پراچہ ،خواجہ اعجاز احمد سکا ،مولانامحمد عاصم مخدوم،حافظ شیعب الرحمن ،مولانا حافظ عبداللہ مظہر ،مولانا مفتی عبیدالرحمن سمیت ام شعبہ ہائے زندگی سے وابستہ ہزاروں افراد نے شرکت کی ۔ بعد میں مرحوم کو مقامی قبرستان شیرشاہ اچھرہ لاہور میں سپردخاک کردیاگیا، تدفین کے بعد مولانا صوفی محمد سرورؒ کی قبر کی مٹی سے ایک دم بہت تیز خوشبو آنا شروع ہوئی جس پر لوگوں کی بہت بڑی تعداد نے عقیدت میں قبرسے مٹی اٹھا لی جس کے بعد جامعہ اشرفیہ لاہور کی انتظامیہ نے قبرپردوبارہ مٹی ڈال کر اس کودرست کیا ۔

صوفی محمد سرور،انتقال

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...